.

الشیخ ولید آل ابراہیم سال رواں کی ’عرب صحافتی شخصیت‘ قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ ٹیلی ویژن چینل کے مادر ٹیلی ویژن نیٹ ورک مڈل ایسٹ براڈ کاسٹنگ کارپوریشن ’’MBC ‘‘کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹر الشیخ ولید بن ابراہیم آل ابراہیم کو عرب میڈیا فورم کی جانب سے سال 2015ء کی اہم ترین صحافتی شخصیت قرار دیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عرب میڈیا فورم کے زیراہتمام دبئی میں منعقدہ چودھویں سالانہ تقریب تقسیم انعامات میں متحدہ عرب امارات کے وزیراعظم اور نائب صدر الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے ’’ایم بی سی‘‘ کے چیئرمین الشیخ ولید آل ابراہیم کو رواں سال کی بہترین صحافتی شخصیت کا ایوارڈ دیا۔

اس موقع پر عرب میڈیا فورم کی جانب سے الشیخ ولید بن ابراہیم آل ابراہیم کی ربع صدی پر پھیلی پیشہ وارانہ صحافتی خدمات کو شاندار خراج تحسین پیش کرتےہوئے انہیں سال رواں کی بہترین صحافتی شخصیت کے اعزاز سے نوازا۔ اس موقع پر الشیخ ولید کی عرب دنیا کے ایک بڑے ٹیلی ویژن نیٹ ورک کو نہایت کامیابی سے چلانے اور الیکٹرانک میڈیا کو جدید اور عصری تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے حوالے سے ان کی خدمات کو سراہا گیا۔

تقریب میں مختصر بات کرتے ہوئے الشیخ ولید بن ابراہیم آل ابراہیم نے عرب میڈیا فورم اور متحدہ عرب امارات کی حکومت کی جانب سے پیشہ ورانہ صحافت کی حمایت کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا ’’آج جس اعزاز سے مجھے نوازا گیا ہے وہ اس فورم کی پیشہ ورانہ حیثیت کو تسلیم کرنے اور الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم کی قیادت میں متحدہ عرب امارات کی جانب سے فورم کی کارکردگی پر اعتماد کا اظہار ہے۔"

انہوں نے کہا کہ عرب ممالک کے ذرائع ابلاغ اس وقت ایک نئے اور فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوگئے ہیں۔ یہاں سے ہم نے اپنی ترجیحات طے کرنا ہیں بالخصوص لمحہ بہ لمحہ بدلتی صورت حال میں عرب ممالک کے ذرائع ابلاغ کو اپنی متنوع پیشہ ورانہ مہارتوں کا ثبوت دینا ہے۔ یہ اسی صورت میں ممکن ہے جب ہم حقائق کو اصل حالت میں عوام الناس کے سامنے پیش کریں اور عوام کو رائے عامہ تیار کرنے میں مدد فراہم کریں۔ اس وقت ہمارے سامنے ایک بڑا چیلنج ٹیکنالوجی اور سائنسی انقلاب سے استفادے کی صلاحیت کا بھی ہے کہ آیاہم جدید سائنسی آلات اور ٹیکنالوجی سے کس حد تک افادہ اور استفادہ کرتے ہوئے ابلاغی ذرائع کو استعمال میں لاکر بیداری امت کے ساتھ اقتصادی اور سماجی فوائد سمیٹ سکتےہیں۔

الشیخ آل ابراہیم نے "سال کی بہترین صحافتی شخصیت‘‘ قرار دینے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ میرے لیے یہ ایک اعزاز توہے ہی مگر الشیخ محمد بن راشد آل مکتوم کےہاتھوں اس اعزاز کا ملنا نہ صرف میری ذات کے لیے بلکہ عرب صحافت سے وابستہ تمام کارکنوں اور ’’MBC‘‘ کے لیے باعث فخر ہے۔ میں اس اعزاز کوجملہ عرب اہل صحافت اور ’’ایم بی سی‘‘ کے نام کرتا ہوں جس نے ربع صدی کی مسلسل محنت اورپیشہ وارانہ صحات کے بعد یہ مقام حاصل کیا ہے۔