.

وائٹ ہائوس میں اوباما کے خلاف بغاوت؟

چھوٹی لڑکی نے دنیا کی جدید ترین فوج کے سربراہ کو بے بس کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دنیا میں طاقتور شخصیات بعض اوقات بہت معمولی سی چیزوں کے آگے بے بس ہوتے ہیں۔ ایسی ہی صورتحال سامنا ریاست ہائے امریکا کےسربراہ کو کرنا پڑا۔ امریکی صدر براک حسین اوباما دنیا کی سب سے جدید ترین فوج کے سربراہ ہوسکتے ہیں مگر ایک چھوٹے بچے کی ضد کے آگے ان کی بھی ایک نہیں چلتی ہے۔

امریکی صدر کی وائٹ ہائوس میں ایک تصویر انٹرنیٹ پر بہت مقبول ہے جس میں ان کے سامنے ایک چھوٹی سی بچی شدید غصے میں رو رہی تھی۔ تصویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کلاڈیا موزر نامی بچی غصے میں زمین پر لیٹ کر قالین کو پیٹ رہی ہے۔ بچی کے اس عمل پر براک اوباما کو بے بسی کے عالم میں ہاتھ اٹھا کر اپنی ہار تسلیم کرتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

کلاڈیا موزر اپنی ماں امریکی صحافیہ اور مصنف لورا موزر کے ساتھ وائٹ ہائوس میں اوباما خاندان کی مہمان تھیں۔ لورا نے یہ تصویر سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری کی جس میں کلاڈیا کو غصے کے عالم میں قالین پر لیٹے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے اور ان کی والدہ، بہن اور براک اور میشل اوباما اس منظر کو بے بسی کے عالم میں دیکھ رہے ہوتے ہیں۔

لورا موزر نے ٹویٹر کو بتایا کہ یہ موقع اس گھںٹے میں پیش آنیوالے ایسے دس واقعات میں سے صرف ایک نمونہ ہے۔

امریکی صدر اوباما کے لئے یہ کوئی پہلا موقع نہیں ہے کہ انہیں بچوں کی ضد کا سامنا کرنا پڑا ہو۔

اس سے پہلے بھی ماہ ستمبر کے دوران ایک امریکی سیکرٹ سروس کے ایجنٹ کے بیٹے کی تصویر جاری کی گئی تھی جس میں وہ امریکی صدارتی دفتر اوول آفس کے ایک صوفے پر منہ کے بل گرا پڑا ہے۔ بچے کے مطابق وہ یہاں پر بور ہورہا تھا۔