.

عالمی شہرت یافتہ مصری اداکار عمرالشریف چل بسے!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے عالمی شہرت یافتہ اداکار عمرالشریف طویل علالت کے بعد جمعہ کے روز انتقال کر گئے ہیں۔ان کی عمر تراسی سال تھی۔

عمرالشریف نے ہالی وڈ کی فلموں ڈاکٹر ژواگو اور لارنس آف عریبیہ میں کرداروں سے عالمی شہرت پائی تھی۔ان کے ایجنٹ اسٹیو کینس نے بتایا ہے کہ عمرالشریف کا قاہرہ کے علاقے حلوان میں واقع اسپتال میں دل کا دورہ پڑنے سے انتقال ہوا ہے۔وہ گذشتہ تین سال سے الزائمر کے مرض میں مبتلا تھے۔ان کے پوتے نے جمعہ کو فیس بُک صفحے پر ان کی ایک تصویر پوسٹ کی ہے جس میں ان کے انتقال کی اطلاع دی ہے۔

مئی کے وسط میں ان کے بیٹے طارق الشریف نے ہسپانوی اخبار ایل مندو کو بتایا تھا کہ ان کے والد گذشتہ تین سال سے الزائمر کا شکار ہیں۔ انھوں نے مزید بتایا کہ وہ خود سے تو آگاہ تھے لیکن جب ان کے مداح ان سے ملنے کے لیے آتے تو انھیں ان کو پہچاننے میں دشواری ہوتی تھی۔

عمرالشریف نے سنہ 1962ء میں ریلیز ہونے والی ہالی وڈ کی مشہورزمانہ فلم لارنس آف عریبیہ میں شریف علی کا کردار ادا کیا تھا اور اس کی وجہ سے ان کی شہرت کو چار چاند لگ گئے تھے۔

ان کی مشہور مصری اداکارہ فاتن حمامہ سے محبت کی شادی ہوئی تھی۔وہ ''لیڈی آف دی عرب سکرین'' کے نام سے مشہور تھیں لیکن ان کے درمیان سنہ 1974ءمیں علاحدگی ہوگئی تھی۔

عمرالشریف مصر کے دوسرے بڑے شہر اسکندریہ میں ایک کیتھولک خاندان میں پیدا ہوئے تھے اور ان کا اصل نام ميشال دمتری شلهوب تھا۔انھوں نے فاتن حمامہ سے سنہ 1955ء میں شادی سے قبل اسلام قبول کیا تھا۔حمامہ کو طلاق دینے کے باوجود عمرالشریف کا کہنا تھا کہ وہ ان کی زندگی کی محبت تھیں اور انھوں نے اہلیہ سے علاحدگی کے بعد باقی زندگی دوبارہ شادی نہیں کی تھی۔

ان کی مشہور فلموں میں لارنس آف عریبیہ کے علاوہ ''ڈاکٹر ژواگو'' 1965ء اور ''فنی گرل'' 1968ء میں ریلیز ہوئی تھیں۔لارنس آف عریبیہ میں معاون اداکار کے طور پر شاندار اداکاری کی وجہ سے ان کا نام اکیڈیمی ایوارڈ کے لیے نامزد کیا گیا تھا اور انھوں نے تین گولڈن گلوب ایوارڈ جیتے تھے۔انھوں نے ''شی'' اور ''دا پنک پینتھر اسٹرائیکس اگین'' میں بھی کردار ادا کیا تھا۔