.

البوبدری قبیلے کا داعش کے خلیفہ کی بیعت سے انکار

ابوبکر البغدادی کے قبیلے کا سلسلہ نسب حضرت حسین رضی اللہ عنہ سے جا کر ملتا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی عراق وشام (داعش) کے خود ساختہ خلیفہ ابوبکر البغدادی کے عراق کے شہر سامراء میں آباد آبائی قبیلے البوبدری نے ان کی بیعت سے انکار کردیا ہے اور ان کی کارروائیوں کی مذمت کرتے ہوئے ان سے برأت کا اظہار کیا ہے۔

البوبدری قبیلے نے داعش سے وابستہ ویب سائٹس کے ان الزامات کی بھی تردید کی ہے جن میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ قبیلے نے ابوبکر اور ان کی جماعت کی بیعت کر لی ہے۔

ایک قبائلی سردار نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر العربیہ نیوز کو بتایا ہے کہ داعش کا ان کے قبیلے سے کوئی تعلق نہیں ہے اور ابوبکرالبغدادی اس تنظیم کے وفادار ہیں ،اپنے قبیلے کے نہیں۔اس قبائلی سردار نے کہا کہ ان کے قبیلے کا ابوبکر اور اس کے قول وفعل اور حرکات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

ایک سکیورٹی تجزیہ کار وافق السامرائی نے بتایا ہے کہ البوبدری قبیلہ تاریخی طور پر نبی اکرم حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی آل اولاد میں سے ہے۔وہ حسینی ،قریشی اور ہاشمی ہیں۔اس کے ارکان کی تعداد دس ہزار کے لگ بھگ ہے اور ان میں زیادہ تر سامراء ہی میں آباد ہیں۔اس قبیلے کے جد امجد الإمام جعفر الزكی تھے۔ان کے بعد ان کا سلسلہ نسب یوں ہے:امام جعفر الزکی بن الإمام علی الہادی بن الإمام محمد الجواد بن الإمام علی الرضا بن الإمام موسىٰ الكاظم بن الإمام زين العابدين بن الإمام الحسين بن الإمام علی بن أبی طالب ہے۔