.

جدہ کی نئی سڑکوں پر سرنگیں پانی میں ڈوب گئیں

نئی سرنگوں اور دیگر مںصوبوں میں قواعد کی خلاف ورزی پر بلدیہ ذمہ دار نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ساحلی شہر جدہ میں دو روز کی موسلا دھار بارش سے شہر کی مرکزی شاہراؤں پر بنائے انڈر پاسز اور سرنگیں پانی سے بھر جانے پر شہریوں نے شدید غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔ اس صورتحال کے باعث وہ اپنی گاڑیاں پانی میں ڈوپ جانے کے بعد عملاً محاصرے میں آ گئے۔

'العربیہ' کی سیکرین اور ویب سائٹ پر نئی سڑکوں پر بنائی گئی سرنگوں کو پانی میں ڈوبا دیکھا جا سکتا ہے جس سے شہریوں اور تارکین وطن کی مشکلات میں اضافہ ہو گیا۔ شہزادہ ماجد شاہراہ پر ٹریفک جام ہو گئی۔ متعدد شہریوں نے شکایت کی ان کی بیس سے زائد گاڑیاں سرنگوں کے پانی میں ڈوب گئیں ہیں۔

جدہ میونسپلٹی کا ردعمل

جدہ میونسپلٹی کے ترجمان محمد الکومی کا کہنا ہے کہ شہر کی انتظامیہ سرنگوں اور دوسرے متاثرہ علاقوں سے پانی نکالنے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔

محمد الکومی نے اعتراف کیا کہ پمپنگ اسٹیشن کو بجلی فراہم کرنے والے گرڈ سٹیشن کے ٹرپ کرنے سے متعدد سرنگوں میں پانی جمع ہونا شروع ہو گیا۔

انہوں نے بتایا کہ نئے رہائشی یونٹس کے ڈیزائنز میں لگے ہوئے پمپوں نے سڑکوں اور سرنگوں میں کھڑا ہونے والا پانی جذب نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ نئے رہائشی یونٹس کی بعض سروسز میں خلاف قانون امور کی ذمہ داری میونسپلٹی پر عائد نہیں کی جا سکتی۔ ان قواعد کی خلاف ورزی تعمیراتی کمپنیوں نے کی ہے اور میڈیا میں ان کی نشاندہی ہوتی رہی ہے۔

غیر معمولی موسم

محکمہ شہری دفاع نے بتایا کہ گھروں میں رہنے اور بجلی کے کھمبوں کے قریب نہ جانے سے متعلق ہدایات کا سلسلہ آج رات سے ختم ہو جائے گا۔ محکمہ نے سڑک پر کرنٹ پھیلنے والی جگہوں پر نہ جانے کی ہدایات جاری کر رکھی تھیں۔ محکمہ موسمیات کی جنرل ڈائریکٹوریٹ جدہ نے بتایا کہ گذشتہ روز 22 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی جو علاقے میں ہونے والی معمول کی بارشوں سے بہت زیادہ تھی۔

ڈائریکٹوریٹ نے بتایا کہ ہم نے آئندہ ایسے واقعات کے دوبارہ رونما نہ ہونے سے متعلق اپنا ہوم ورک مکمل کر لیا ہے تاکہ شہریوں کو آنے والے دنوں میں ایسی مشکلات سے بچایا جا سکے۔