.

موت کو گلے لگانے والے کو ترک صدر نے گلے لگا لیا

باسفورس پل سے کود کر خودکشی کا متمنی ایردوآن کا گرویدہ ہو گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن نے اپنے ملک کے ایک شہری کو استنبول کے مشہور باسفورس پل سے کود کر خودکشی کرنے والے کو اپنی باتوں کا گرویدہ بنا کر موت کے منہ میں جانے سے روک لیا۔

تفصیلات کے مطابق یہ واقع اس وقت پیش آیا جب ترک صدر کا قافلہ یورپ کو ایشیا کے ساتھ ملانے والے باسفورس پل سے گذرا رہا تھا تو عین اس وقت گھریلو حالات سے دلبرداشتہ ایک شخص پل سے کودنے جا رہا تھا۔

واقعے سے متعلق ٹی وی چینلز پر دکھائی جانے والی ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایردوآن کے محافظ دستے میں شامل اہلکار بلبلاتے ہوئے ایک تیس سالہ شخص کو صدر سے بات کرنے کے لئے لیکر آ رہے ہیں۔ چند لمحوں بعد خودکش کا متمنی شخص ایردوآن کے ہاتھ چومتا دیکھتا جا سکتا ہے۔

'ڈوگان' نیوز ایجنسی کے مطابق خودکش کے متمنی شخص کو بحفاظت پل سے نکال لیا گیا۔

نیوز ایجنسی کے مطابق پولیس دو گھنٹوں سے خودکشی کے متمنی شخص سے گفت و شنید کر رہی تھی تاکہ اسے خودکشی سے روکا جا سکے کیونکہ وہ اپنی گاڑی پل پر کھڑی کر کے پل کی سائیڈ ریلنگ کی سمت پھلانگ گیا تھا۔

یاد ہے یورپ اور ایشیا کو ملانے والے باسفورس کا تاریخی پل 64 میٹر [211 فٹ] بلند ہے اور یہاں سے کود کر کئی افراد اپنی زندگیاں ختم کر چکے ہیں۔