.

ہیرے کی انگوٹھی بھول جایے .. تحفے میں بندر پیش کیجیے !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

چین کے مالدار طبقے میں ان دنوں بطور تحائف ہیرے کی انگوٹھیوں کے بجائے ننھے ترین بندروں

(Pygmy marmosets) کا استعمال دیکھنے میں آرہا ہے۔ ان بندروں کو پیار میں "انگوٹھا بندر" (thumb monkeys) کا نام دیا گیا ہے۔

ان بندروں کا حجم 20 سینٹی میٹر سے زیادہ نہیں ہوتا اور یہ چوہے سے بھی چھوٹے ہوتے ہیں۔ یہ انسانی انگوٹھے کے گرد ایسے لپٹ جاتے ہیں گویا کہ اس سے معانقہ کررہے ہوں۔

انگریزی اخبار "ڈیلی میل" نے چینی روزنامے "پیپلز ڈیلی آن لائن" کے حوالے سے بتایا ہے کہ پگمی مامورسٹ جو دنیا میں بندروں کی سب سے چھوٹی قسم سمجھی جاتی ہے، اس کو چین میں غیرقانونی صورت میں فروخت کیا جارہا ہے۔ اس ایک بندر کی قیمت 30 ہزار یوآن یعنی تقریبا 4563 امریکی ڈالر ہے۔

پگمی بندر جنوبی امریکا میں دریائے ایمیزون کے مغرب میں واقع برساتی جنگلوں میں رہتے ہیں۔ تاہم ان دنوں چین میں غیرملکی پالتو جانوروں کے درمیان ان کی مقبولیت میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے، بالخصوص "ایئر آف مونکی" منانے کے لیے تحفے کے طور پر۔

چین میں زیورات کی ایک دکان کے مالک نے سوشل ویب سائٹ "ویبو" پر اس ننھے بندر کو نئے سال کا نیک شگون قرار دیتے ہوئے عوام کو اس کی قیمت اور فروخت کے مقامات سے بھی آگاہ کیا ہے۔

اگرچہ اپنی قابل قبول صورت اور حجم کی وجہ سے ان چھوٹے بندروں کی بطور پالتو جانور مقبولیت میں اضافہ ہورہا ہے تاہم ان کے اصلی ماحول سے باہر ان کی دیکھ بھال بہت مشکل کام ہے۔

دوسری جانب ایک سرکاری ماہر نے (اپنی شناخت نہ ظاہر کرنے کی شرط پر) بتایا کہ "اس بندر کی خرید و فروخت غیرقانونی شکل میں ہورہی ہے۔ چین اس کا اصلی ملک نہیں اس لیے یہاں اس کا زندہ رہنا کافی مشکل معاملہ ہے"۔

جانوروں کے تحفظ کی عالمی تنظیم "ورلڈ اینیمل پروٹیکشن" کے ترجمان نے بھی باور کرایا ہے کہ بنیادی طور پر پگمی ایک زمینی جانور ہے اور یہ پالتو جانور نہیں، لہذا اس کے تحفظ کو اولین ترجیح دیتے ہوئے اسے اپنے قدرتی ماحول میں ہی رہنا چاہیے۔

یاد رہے کہ پگمی مامورسٹ ... بین الاقوامی اتحاد برائے تحفظ قدرت ( (IUCNکی جانب سے تیار کردہ "معدومی کے خطرے سے دوچار" جانوروں کی فہرست میں شامل ہے۔