.

چکنائی کھائیے ۔۔۔ وزن کم کیجیے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یہ ایک قدرتی امر ہے کہ وزن کم کرنے کے لیے غذائی پرہیز کرنے والا ہر قسم کی چکنائی سے دور رہتا ہے.. جیسا کہ لوگوں کے درمیان یہ خیال پھیلا ہوا ہے کہ چکنائی سے جسمانی وزن میں اضافہ ہوتا ہے۔ تاہم یہ حقیقت بعض لوگوں کے لیے حیران کن ہوگی کہ چکنائی کا اعتدال کے ساتھ استعمال جسم میں چربی کو جلانے کے لیے انتہائی مفید ہے جس سے وزن میں بھی کمی آتی ہے۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" میں شائع ہونے والی ایک طبی تحقیق کی رپورٹ کے مطابق مفید روغنیات کی حامل غذائیں شکم سیری اور اطمینان کا دائمی احساس فراہم کرتی ہیں۔ یہ جانتے ہوئے کہ جدید تحقیقات نے ثابت کیا ہے کہ سیرشدہ چکنائی سے امراض قلب یا خون کی شریانوں سے متعلق امراض کے خطرے میں اضافہ نہیں ہوتا ہے۔

رپورٹ میں مفید چکنائی کی 10 اقسام کو جمع کیا گیا ہے جو وزن کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتی ہیں :


1 – ناریل کا تیل

ہم جانتے ہیں کہ ناریل کے تیل کی سالماتی ساخت "MTC" یعنی کہ میڈیم ٹرائی گلائسرائیڈ چین ہے جو دیگر چکنائیوں کی نسبت پانی میں زیادہ تیزی سے حل ہونے والی ہے۔ اس کا مطلب ہے کہ یہ براہ راست جگر تک پہنچتی ہے جہاں وہ جسم کے ایندھن کے طور پر جل جاتی ہے اور اس طرح محفوظ نہیں رہتی۔ انسانی جسم اس چکنائی کو جس طریقے سے جذب کرتا ہے اس سے میٹابولزم کی رفتار میں 15 فی صد اضافہ ہوجاتا ہے۔ ناریل کے تیل کو کھانا پکانے کے علاوہ براہ راست غذائی اشیاء پر ڈال کر بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔


2 – مگرناشپاتی (ایووکاڈو)

مگرناشپاتی کا شمار مفید غذائی عناصر سے بھرپور پھلوں میں کیا جاتا ہے۔ یہ یک ناسیر شدہ چکنائی سے پر ہونے کی وجہ سے یہ جسم میں نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح کو کم کرتا ہے۔ مگرناشپاتی کو سلاد اور انڈے کے ساتھ استعمال کرنے سے کھانے کا لطف دوبالا ہوجاتا ہے جب کہ اسے مشروب میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔


3 – سیلمن مچھلی

سیلمن مچھلی کو غذائی عناصر اور جسم کے لیے مفید چکنائی کے لحاظ سے مچھلیوں کی بہترین اقسام میں شمار کیا جاتا ہے۔ اگر کسی کو مچھلی کی بو پسند نہیں ہے تو بھنی ہوئی سیلمن مچھلی کھانے میں اس کو لذیذ اور اشتہا انگیز خوشبو دے گی۔ اس کے علاوہ دھونی دی ہوئی سیلمن کو سلاد یا انڈے کے آملیٹ کے ساتھ بھی پیش کیا جاسکتا ہے۔


4 – گھی

ہم سب نے یہ سن رکھا ہے کہ مکھن خون کی شریانوں کو بند کر دیتا ہے کیوں کہ یہ خالص چکنائی سے بنا ہوتا ہے۔ تاہم جدید تحقیقات کے نتائج کے مطابق مکمل چکنائی والی ڈیری مصنوعات وزن کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ امراض قلب اور فالج کے خطرے کو دور کرسکتی ہیں۔ مکھن وٹامن K ، E ، اور Aسے بھرپور ہوتا ہے جو بہت آسانی سے جذب ہوجاتے ہیں۔

5 – زیتون کا تیل

زیتون کے تیل کو جسم کے لیے مفید یک ناسیر شدہ چکنائی شمار کیا جاتا ہے.. اور یہ آسانی سے ہضم ہوجاتا ہے۔ اس سے جسم میں "صحت مند" کولیسٹرول کی سطح میں اضافہ ہوتا ہے۔ اس کو سلاد میں استعمال کرنے کے علاوہ براہ راست کھانوں میں بھی ڈالا جاسکتا ہے۔


6 – السی کا تیل

یہ جسم کے لیے انتہائی مفید عنصر "اومیگا 3" سے بھرپور ہوتا ہے۔ اس کو سلاد پر ڈال کر یا صبح کے ناشتے میں دلیے کے ساتھ استعمال کیا جاسکتا ہے۔


7 – میکا ڈامیا (گری دار پھل)

میکاڈامیا بھی یک ناسیرشدہ چکنائی سے بھرپور پھل ہے جو جسم کے لیے نہایت مفید ہوتا ہے۔ میکا ڈامیا انسانی جسم کو وہ لازمی روغنیات فراہم کرتا ہے جن سے اومیگا 3 اور اومیگا 6 کے فیٹی ایسڈ کےدرمیان توازن برقرار رہتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ جسم میں روغنیاتی پروٹین پیدا کرنے میں بھی اضافہ کرتا ہے جو دل کو صحت مند رکھنے کے لیے لازم ہے۔ اس طرح امراض قلب اور دماغی صحت کی خرابی کے خطرات کم ہوجاتے ہیں۔ یہ جسم میں "نقصان دہ کولسٹرول" کی سطح اور ٹرائی گلیسرائڈ کی شرح میں اضافہ کرتا ہے۔


8 – بادام

بادام غذائیت سے بھرپور قدرت کا انمول تحفہ ہے۔ یہ وٹامن E اور کئی معدنیات کا مرکب ہوتا ہے جن میں فولاد، میگنیشیئم اور کیلشیئم شامل ہیں۔ اس کے علاوہ بادام میں جسم کے لیے مفید یک ناسیرشدہ چکنائی بھی وافر مقدار میں ہوتی ہے جس سے وزن کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔


9 – انڈے کی زردی

انڈے کی زردی کے دیوانوں کے لیے.. اب وقت آگیا ہے کہ سفیدی کو بھول کر زردی کھائی جائے۔ انڈے کی زردی 100% طور پر وٹامن A ،D ،E اور K سے بھرپور چکنائی کے علاوہ کیلشیئم، فولاد، جست، بائیوٹن، تھایامین اور وٹامن بی 6 اور 12 پر مشتمل ہوتی ہے۔ جدید طبی تحقیقات سے ثابت ہوا ہے کہ انڈے کی سفیدی کا بھی بطور کاربوہائیڈریٹ انسولین اور خون میں شکر پر وہ اثر ہوتا ہے کیوں کہ اس میں وہ مفید چکنائی نہیں پائی جاتی جو زردی میں ہوتی ہے۔

10 – خشک میوہ جات کا مکھن

میوہ جات کے مکھن کی زیادہ تر اقسام آپ کے تصور سے زیادہ مفید غذائی عناصر پر مشتمل ہوتی ہیں۔ ڈاکٹر حضرات وہ مکھن کھانے کی ہدایت کرتے ہیں جس میں شکر کی مقدار زیادہ نہ ہو مثلا مونگ پھلی کا مکھن (پی نٹ بٹر) اور بادام کا مکھن وغیرہ۔

میوہ جات کے مکھن میں پروٹین، ناسیر شدہ چکنائی، وٹامن B اور فولیک ایسڈ ہوتا ہے۔ ان کے علاوہ یہ دل اور صحت کے لیے مفید مواد اور جسم کے لے ضروری معدنیات پر بھی مشتمل ہوتا ہے۔ میوہ جات کا مکھن انسانی جسم کو ضروری توانائی فراہم کرتا ہے۔ لہذا اس کو ورزش کے بعد ہلکی غذا کے طور پر یا صبح کے وقت کھایا جاسکتا ہے تاکہ جسم کو پورے دن چست و توانا رکھا جاسکے۔