حضرت مہدی اُڑن طشتری استعمال کرتے ہیں : ایرانی مرجع تقلید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سماجی رابطے کی فارسی زبان کی ویب سائٹوں پر ان دنوں ایران کی ایک نمایاں شیعہ مذہبی شخصیت کے دلچسپ بیان کا چرچا ہو رہا ہے۔ فارس نیوز ایجنسی کے مطابق قُم شہر میں مرجع تقلید مکارم شیرازی نے دعوی کیا ہے کہ شیعوں کے نزدیک بارہویں امام حضرت مہدی منتظر (علیہ السلام) آسمان میں سفر کے لیے اُڑن طشتری کا استعمال کرتے ہیں۔

نیوز ایجنسی کے مطابق شیرازی نے جمعے کے روز اپنے ایک معتقد کی جانب سے حضرت مہدی منتظر سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ " وہ اُڑن طشتری سے ملتے جلتے کمال درجے کے ایک ذریعے پر سوار ہوتے ہیں اور اس کے ساتھ آسمان کا سینہ چیرتے ہیں۔ روایت میں بادل کا لفظ استعمال ہوا ہے تاہم یقینا اس سے مراد عام بادل نہیں ہے کیوں کہ وہ سفر کے لیے استعمال ہونے والا کوئی ذریعہ نہیں۔ یہاں بادل کی مانند سفر کرنے والے ایک ذریعے کی جانب اشارہ ہے جس کی آواز بادل کی گرج کی سی ہے اور رفتار بجلی کی کوند کی طرح ہے"۔

یاد رہے کہ مکارم شیرازی اپنے قول میں شیعہ مذہب کے پانچویں امام محمد بن علی باقر رحمت اللہ علیہ سے منسوب ایک روایت کو بنیاد بناتے ہیں۔ شیرازی کے مطابق روایت میں بتایا گیا ہے کہ مہدی منتظر آسمان میں بادل کی طرح چلنے والا ذریعہ استعمال کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ بہت سے حلقوں نے اس عقیدے کا فائدہ اٹھانے کی بھی کوشش کی۔ بعض نے مہدی منتظر سے تعلق کا دعوی کیا جب کہ بعض نے یہ دعوی کیا کہ ان کی قیادت مہدی منتظر سے رابطے میں ہیں۔ آج بھی ایرانی مرشد اعلی علی خامنہ ای کے بعض حامیوں کا کہنا ہے کہ "السيد الخراسانی" (خامنہ ای خراسان کے شہر مشہد میں پیدا ہوئے) ہی وہ شخصیت ہیں جو مہدی منتظر کو پرچم حوالے کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں