.

نیند کے متعلق 7 دلچسپ حقائق جو شاید آپ نہ جانتے ہوں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متعدد طبی مطالعوں میں سونے کی اہمیت پر اتفاق کیا گیا ہے اور نیند کی کمی اور زیادتی کے ہماری صحت اور برتاؤ پر اثرات کے حوالے سے واضح انکشافات کیے جا چکے ہیں۔ جوں جوں انسان کی عمر بڑھتی ہے اس کے ساتھ انسان کے لیے نیند کا ضروری دورانیہ بھی کم ہوتا چلا جاتا ہے۔

تاہم "نیند" کے حوالے سے بعض دل چسپ معلومات اور حقائق کو ہم بھول جاتے ہیں یا پھر ہم ان کے بارے میں جانتے ہی نہیں ہیں۔

آپ کی خدمت میں نیند اور سونے کے عمل کے بارے میں 7 حقائق پیش کیے جا رہے ہیں جن کو ایک بین الاقوامی ادارے National Sleep Foundation نے اپنی رپورٹ میں بیان کیا ہے۔

1 – عام صورت میں ورزش کرنا جسم کو گہری نیند میں لے جانے کے لیے مددگار ثابت ہوتا ہے۔ تاہم بستر کا رخ کرنے سے قبل ورزش یا کھیل کی سرگرمی سے جسم اور دماغ بیدار رہ سکتا ہے اور سونے میں دشواری کا سامنا ہوسکتا ہے۔

2 – اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ طلاق یافتہ افراد یا شریک حیات کی موت کے سبب تنہا زندگی گزارنے والے افراد کو دیگر انسانوں کے مقابلے میں نیند کے مسائل اور بے خوابی کا زیادہ سامنا کرنا پڑتا ہے۔

3 – یہ بات تو معروف ہے کہ انسانوں کی اکثریت نیند کے کسی ایک دورانیے میں خواب دیکھتی ہے تاہم سائنس دانوں نے ابھی تک پوری طرح تصدیق نہیں کی ہے کہ آیا جانور بھی سونے کے دوران خواب دیکھتے ہیں۔

4 – رہائش کا علاقہ جتنی بلندی پر ہوگا نیند کے دوران اضطرابی کیفیت میں بھی اتنا ہی اضافہ ہوگا۔ مثلا اگر آپ کسی انتہائی بلند مقام پر رہائش اپناتے ہیں تو نیند کے حوالے سے ہم آہنگ ہونے میں دو سے تین ہفتے درکار ہوں گے۔

5 – آپ نیند کے دوران پڑھائی اور سیکھنے کا عمل بھی کر سکتے ہیں۔ اگر آپ سونے سے قبل کسی مخصوص امتحان کے لیے متن کو دہرا رہے ہیں تو نیند کے دوران بھی آپ کا دماغ معلومات کا تجزیہ کرتا رہے گا اور اسی طرح کسی خاص نتائج تک بھی پہنچ سکتا ہے !

6 – مطلوبہ نیند پوری کرنے سے آپ کی ذہانت میں اضافہ ہوتا ہے۔ اس لیے کہ دماغ سونے کے دوران اپنی ادراکی صلاحیتوں کو مضوبط کرنے پر کام کرتا ہے۔

7 – جو لوگ دن اور رات میں اوقات کار کی تبدیلی کے ساتھ کام کرتے ہیں.. ان کے دیرینہ امراض کا شکار ہونے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ ان میں امراض قلب اور معدے اور آنتوں کی بیماریاں شامل ہیں۔