.

ٹیوشن پڑھانے والے اساتذہ کو کویت سے بے دخل کرنے کی تجویز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت کی وزارت تعلیم نے پرائیویٹ طور پر ٹیوشن پڑھانے والے تارک وطن اساتذہ کو بے دخل کرنے کی سفارش کی ہے جس پر اس خلیجی ریاست میں ایک نئی بحث شروع ہوگئی ہے۔

نیوزسائٹ صبر کے مطابق تعلیم اور اعلیٰ تعلیم کے وزیر ڈاکٹر محمد فارس نے کہا ہے کہ ''جس شخص نے تارک وطن استاد کو بے دخل کرنے کی تجویز پیش کی ہے،وہ کویت کی قومی اسمبلی کا رکن ہے لیکن وہ اس کا مجاز نہیں تھا''۔

انھوں نے وضاحت کی ہے کہ ''اس کا اطلاق صرف ان اساتذہ پر ہوگا جو وزارت کی رضامندی یا اجازت کے بغیر پرائیویٹ طور پر اسباق پڑھا رہے ہیں''۔

پرائیویٹ طور پر اسباق (ٹیوشن) پڑھانے والے غیرملکی اساتذہ کو کویت سے بے دخل کرنے کا مجوزہ قانون رکن اسمبلی ڈاکٹر ولید طباطبائی نے پیش کیا تھا۔

کویت ٹیچرز سوسائٹی کے سربراہ اور کویتی شہری ولید الحاسوی کا کہنا ہے کہ مجوزہ قانون پر مختلف پارلیمانی کمیٹیوں میں غور وخوض ہوگا اور پھر کہیں جا کر یہ منظور ہوگا اور ایکٹ بنے گا۔