.

عورت کا مرد سے بہتر ہونا.. سائنسی دلیل سے ثابت !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مرد اور عورت کے درمیان یہ مسابقت عرصہ دراز سے جاری ہے جس میں دونوں صنفیں یہ ثابت کرنے کی کوشش کرتی ہیں کہ وہ دوسری سے زیادہ قابل اور باصلاحیت ہے۔ عام طور سے یہ سمجھا جاتا ہے کہ عورتیں ایک وقت میں متعدد ذمے داریوں کی انجام دہی کے حوالے سے مردوں سے زیادہ اہلیت رکھتی ہیں۔ بعض خواتین اس تعریف سے خوش ہوتی ہیں جب کہ بعض کے نزدیک کچھ مرد اس بات کو اپنی بعض ذمے داریوں سے فرار کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ برطانوی اخبار " ڈیلی میل" کے مطابق سائنس دانوں کو اس بات کی قوی دلیل ملی ہے کہ کم از کم ساٹھ برس سے کم عمر خواتین کے مقابلے میں مرد ایک ہی وقت میں دو کام انجام دینے کے حوالے سے پیچھے ہیں۔ مردوں سے جب ٹریڈمِل پر بغیر ہاتھ کی ریلنگ کو پکڑے چلنے کے دوران پیچیدہ امور کے متعلق سوچنے کا مطالبہ کیا گیا تو یہ بات سامنے آئی کہ اس دوران ان کا دایاں بازو رک جاتا ہے۔ تاہم 60 برس سے کم عمر خواتین کے معاملے میں یہ امر "حیران کن" تھا کہ وہ سوچنے کے عمل سے متاثر نہیں ہوئیں اور ان کے دونوں بازو بدستور آزادی کے ساتھ حرکت میں رہے۔

زیورخ میں بلگرسٹ یونیورسٹی ہسپتال میں ٹم کلین اور ان ک ساتھیوں نے 83 صحت مند افراد پر تجربہ کیا جن کی عمریں 18 سے 80 برس کے درمیان تھیں۔ اس دوران انہیں ٹریڈ مل پر چلنے کے دوران رنگوں کو پہچاننے کا ٹیسٹ دیا گیا۔ نتیجے میں 60 برس تک کی خواتین نے مردوں سے بہتہر کار کردگی دکھائی جب کہ اس سے زیادہ عمر کی خواتین کا نتیجہ مردوں کے جیسا ہی رہا۔

دوسری جانب " رائل سوسائٹی" جریدے میں شائع اس تحقیقی مطالعے کو تیار کرنے والوں کا کہنا ہے کہ غالبا خواتین میں پائے جانے والے جنسی ہارمون جو مردوں سے زیادہ ہوتے ہیں ، یہ خواتین کے بیک وقت متعدد کاموں کو بہتر طور انجام دینے کی وجہ ہو سکتے ہیں۔ محققین کے مطابق خواتین میں دماغ پر ایسٹروجن ہارمون کا اثر اس کے ادراکی کنٹرول کو مضبوط بناتا ہے۔

پوتن اور ریگن

اس سلسلے میں دائیں بازو کے غیر متحرک رہنے کا اظہار کئی مرتبہ روس کی سیاسی شخصیات کی جانب سے بھی دیکھنے میں آ چکا ہے جن میں صدر ولادیمر پوتن شامل ہیں۔ پہلے یہ خیال کی جاتا رہا کہ روسی صدر عسکری تربیت کے دوران بائیں بازو کا زیادہ استعمال کرتے رہے جس کے سبب یہ صورت حال پیدا ہوئی۔ اسی طرح سابق امریکی صدر رونالڈ ریگن کے پرانی وڈیو کلپ دیکھے جائیں تو وہ ان کے بھی چلنے کے دوران دایاں بازو ساکن نظر آئے گا۔

دوسری جانب جرمن چانسلر اور سابق برطانوی وزیراعظم مارگریٹ تھیچر کے وڈیو کلپوں کا مشاہدہ کی جائے تو ان خواتین کے دونوں بازو چلنے کے دوران معمول کے مطابق متحرک نظر آئیں گے۔