کیا اسمارٹ ٹی وی آپ کی جاسوسی کرتا ہے ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

یہ بات شاید کسی کے وہم و گمان میں بھی نہ ہو کہ ٹی وی سیٹ ہماری جاسوسی بھی کر سکتا ہے تاہم اسمارٹ ٹی وی بنانے والی مشہور کمپنی "Vizio" کو خود پر لگے الزامات کے تصفیے کے واسطے 22 لاکھ ڈالر کی ادائیگی پر مجبور ہوجانے کے بعد یہ معاملہ سنگین نوعیت اختیار کر گیا ہے۔ کمپنی پر الزام ہے کہ اس نے صارفین کی مرضی جانے بغیر 1.1 کروڑ سیٹس کے ذریعے ناظرین کی دیکھنے کی عادات کو معلوم کیا۔ بعد ازاں "وِزیو" کمپنی نے یہ پہاڑ جیسا ڈیٹا اشتہارات سے متعلق اداروں اور میڈیا کمپنیوں کو فروخت کر کے خوب ڈالر کمائے۔

برطانوی اخبار " ڈیلی میل" کے مطابق کمپنی کو اس امر پر بھی مجبور کیا جا رہا ہے کہ وہ فروری 2014 سے لے کر اب تک جمع کیے جانے والے ڈیٹا کو مستقل طور پر حذف کر دے۔ تاہم امریکی ماہرین نے خبردار کرتے ہوئے اس اندیشے کا بھی اظہار کیا ہے کہ ہوسکتا ہے کہ کمپنی نے برطانیہ سمیت دنیا بھر کے کروڑوں دیگر صارفین کا ڈیٹا جاسوسی کے ذریعے حاصل کیا ہو۔

امریکا میں فیڈرل ٹریڈ کمیشن کی جانب سے پیر کے روز عدالت میں دائر کی جانے والی پٹیشن میں دعوی کیا گیا ہے کہ انٹرنیٹ سے متصل یہ ٹی وی سیٹ مواد پہچاننے والے خود کار پروگرام Automated Content Recognition software (ACR) سے لیس ہیں۔ اس طرح ٹی وی استعمال کرنے والے صارفین کی اجازت کے بغیر ہر سیکنڈ کی معلومات حاصل کی گئی کہ اسکرین پر کیا دیکھا جا رہا ہے۔

اس سافٹ ویئر کے ذریعے نہ صرف سیٹلائٹ چینلوں سے متعلق ڈیٹا حاصل کیا گیا بلکہ DVD اور"Netflix" کے ذریعے دیکھے جانے والے مواد کی بھی جاسوسی کی گئی۔ صارفین سے متعلق حاصل کی جانے والی ذاتی معلومات میں ان کے انٹرنیٹ پروٹوکول یعنیIP ایڈریس بھی شامل ہیں۔ ڈیٹا کے ذریعے تفصیل کے ساتھ مشاہداتی عادات سے مربوط ذاتی معلومات تک رسائی بھی ممکن ہو گئی جس میں عمر ، جنس ، آمدنی ، ازدواجی حیثیت ، گھر کے افراد کی تعداد ، تعلیمی اہلیت اور گھر کی ملکیت شامل ہے۔

غیر قانونی طریقے سے معلومات کا حصول "اسمارٹ انٹر ایکٹیوٹی" کے نام سے دیے گئے ایک فیچر کے ذریعے عمل میں آیا۔ اس فیچر نے خود کار طریقے سے ہر اسمارٹ ٹی وی سیٹ میں کام کرنا شروع کر دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں