یو اے ای ایک صدی بعد مریخ پر انسانی شہر آباد کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) نے ایک ایسا اعلان کردیا ہے جو شاید آپ کو حیران کر دے گا۔دبئی کے حکمراں شیخ محمد بن راشد المکتوم نے منگل کے روز مریخ پر ایک صدی بعد یعنی 2117ء میں مریخ پر ایک انسانی شہر آباد کرنے کا اعلان کیا ہے۔

یہ منصوبہ دبئی کے سو سالہ قومی پروگرام برائے سائنسی ترقی کا حصہ ہے۔اس کے تحت لوگوں کو مریخ پر لے جایا جائے گا۔اس اعلان کے دوران ایک ورچوئل پریزینٹیشن دی گئی ہے اور اس میں مریخ پر شہر کے تصور کے بارے میں مکمل تصویری تفصیل بیان کی گئی ہے۔

دبئی سے شائع ہونے والے اخبار گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق ''اس منصوبے پر اس شعبے میں خصوصی مہارت رکھنے والی بین الاقوامی تنظیموں اور سائنسی اداروں کے ساتھ تعاون کے ذریعے عمل درآمد کیا جائے گا''۔

''اماراتی انجنیئروں کی ایک ٹیم ،سائنس دانوں اور محققین کے ایک گروپ نے مریخ پر پہلے انسانی شہر کو آباد کرنے کا تصور پیش کیا ہے۔یہ شہر روبوٹس بنائیں گے''۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے۔

شیخ محمد کا ایک بیان نقل کیا گیا ہے جس میں انھوں نے کہا ہے کہ '' دوسرے سیاروں پر انسانوں کو بھیجنا ایک طویل عرصے سے خواب رہا ہے۔ ہمارا مقصد یہ ہے کہ یو اے ای اس خواب کو حقیقت کا روپ دینے کے لیے بین الاقوامی کوششوں کو تیز کرے گا''۔

انھوں نے مزید کہا کہ ''انسانی خواہشات کی کوئی حد نہیں ہے اور جو کوئی بھی اس صدی کی سائنسی ایجادات کی جانب دیکھتا ہے، وہ اس بات میں یقین رکھتا ہے کہ انسانی صلاحیتیں اس اہم انسانی خواب کو حقیقت کا روپ دے سکتی ہیں''۔

ان کا کہنا تھا کہ ''نیا مںصوبہ ایک ایسا بیج ہے جو آج ہم بو رہے ہیں اور ہم یہ توقع کرتے ہیں کہ اگلی نسلیں اس کے ثمرات سے فائدہ اٹھائیں گی''۔

یو اے ای نے اس منصوبے سے قبل سنہ 2015ء میں مریخ کے تحقیقاتی مشن کا اعلان کیا تھا۔اس کے تحت عرب دنیا سائنسی تحقیق کے مشن پر اپنا پہلا خلائی جہاز بھیجے گی۔ یہ خلائی جہاز 2021ء میں مریخ پر اُترے گا۔

ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید نے کہا ہے کہ اس منصوبے کا مقصد یو اے ای کی سائنسی پیش رفت کو مزید ترقی دینا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں