.

شُتر مُرغ کی طرح جھکنے والا روبوٹ!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سائنسدانوں کی ٹیم نے حال ہی میں ایک نیا روبوٹ تیار کیا گیا ہے جو اپنے پاؤں پر چلتے ہوئے شُتر مرغ سے ملتا جلتا دکھائی دیتا ہے۔ منفرد انداز سے ڈیزائن کیے گئے اس روبوٹ کا نام "Cassie" ہے۔ اس کی پنڈلی جو کہ کسی بڑے پرندے کی پنڈلی سے مماثلت رکھتی ہے "کیسی" کو اُکڑوں (کُولھوں کے بل) بیٹھنے میں مددگار ثابت ہوتی ہے۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" کے مطابق محققین کا کہنا ہے کہ "کیسی" کا ڈیزائن ایسے روبوٹوں کی تیاری میں استعمال کیا جائے گا جو پارسل کی تقسیم یا امدادی کارروائیوں میں معاونت انجام دے سکیں۔

امریکا کی اوریگون اسٹیٹ یونی ورسٹی میں روبوٹک سائنس کے ایسوسی ایٹ پروفیسر جوناتھن ہرسٹ کے مطابق "پنڈلیوں کے ذریعے حرکت کرنے والے روبوٹ بہت سی ایسے مقامات پر پہنچ سکتے ہیں جہاں پہیوں والے روبوٹ نہیں جاتے۔ یہ ٹیکنالوجی سامان اور کھیپ پہنچانے کے حوالے سے روبوٹوں کو اعلی درجے کی اہلیت سے لیس کرتی ہے۔"

ہرسٹ کا کہنا ہے کہ یہ روبوٹ کھیپ کی ترسیل کا ایک ایسا ذریعہ ہوں گے جن کے ذریعے سال کے 365 دن 24 گھنٹے پارسلوں کی تقسیم ممکن بنائی جاسکتی ہے۔ یہ روبوٹ سڑک کے کنارے فٹ پاتھ پر چلتے ہوئے پارسل اور یہاں تک کہ گھروں کا کچرا بھی وصول کر سکتے ہیں۔

جوناتھن ہرسٹ کے مطابق "روبوٹ کی اس صلاحیت کے نتیجے میں لوگوں کو ہفتے کے اختتام پر خریداری کے روٹین سے بھی نجات مل جائے گی۔ صارفین کو اپنی پسند کے کام انجام دینے کے لیے زیادہ وقت مل سکے گا۔ بہر کیف یہ طویل المیعاد ویژن ہے اور اس سے پہلے کئی اقدامات اور پیش رفت کی ضرورت ہے۔"

"کیسی" روبوٹ کو امریکا کی دو ریاستوں اوریگون اور پینسلوینیا میں قائم کمپنی "ایجیلیٹی روبوٹکس" کی ٹیم نے ڈیزائن کیا ہے۔ روبوٹ کا ڈیزائن اس کو کھڑے ہونے، چلنے اور یہاں تک کہ ایسے نازک انداز سے گرنے میں مدد دیتا ہے جس سے ٹوٹنے کا کوئی اندیشہ نہیں ہوتا۔

'کیسی' کا وزن اوریگون یونی ورسٹی میں اس سے قبل تیار کیے جانے والے روبوٹوں کے مقابلے میں آدھا ہے تاہم اس کی صلاحیت سابقہ روبوٹوں سے کہیں زیادہ ہے۔

جوناتھن ہرسٹ کا کہنا ہے کہ 'کیسی' کو بارش اور برف باری کے دوران بھی استعمال میں لایا جا سکتا ہے اور اس سلسلے میں جانچ کا عمل جاری ہے۔

"کیسی" کو ڈیزائن کرنے والی ٹیم نے چند موٹروں کا اضافہ کیا ہے جس کے نتیجے میں روبوٹ کو کُولھوں کی حرکت میں 3 ڈگری کی آزادی حاصل ہو گئی ہے۔ اس طرح اسے ایک جگہ پر کھڑے ہونے ، بیٹھنے اور جھکنے کی صلاحیت حاصل ہو گئی ہے۔

اس کے علاوہ لیتیھیم آئن کا ایسا منفرد بیٹری پیک ڈیزائن کیا گیا ہے جس کو 'کیسی' سفر کے دوران بآسانی اپنے ساتھ لے کر چل سکتا ہے۔ روبوٹ کا زیادہ تر سامان ٹیم نے خود تیار کیا ہے۔ ہرسٹ کے مطابق ایسے روبوٹ ہیں جو ایک کے بعد دوسرا قدم بڑھانے کی صلاحیت رکھتے ہیں تاہم وہ بہت زیادہ توانائی کا استعمال کرتے ہیں اور ذرا سے خلل پر گر پڑتے ہیں۔