.

گاڑیوں کا روغن نیل پالش میں کس طرح تبدیل ہو گیا ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

آج کے دور میں جو نیل پالش استعمال ہو رہی ہے وہ گاڑیوں کے روغن میں استعمال ہونے والے رنگ کی ہی خوش نما شکل ہے جسے ناخنوں پر لگانے کے قابل بنانے کے واسطے اس کے کے اجزاء ترکیبی کو کئی مرتبہ نکھارا جاتا ہے۔

سوال یہ ہے کہ اس نیل پالش کا فیشن کب نمودار ہوا جو آج دنیا بھر میں خواتین کے بیچ پھیلے سنگھار اور آرائش کا ایک اہم ترین ذریعہ بن چکا ہے ؟

تاریخ میں پہلی مرتبہ نیل پالش کا استعمال قدیم بابل میں تقریبا 3200 ق م میں کیا گیا۔ یہاں معاشرے کے اشرافیہ طبقے کے مرد اور خواتین اپنے ناخنوں پر سیاہ سُرمہ لگاتے تھے جب کہ عام طبقہ نے سبز سُرمے کو اختیار کیا ہوا تھا۔

سال 3000 ق م میں چین میں ناخنوں کو مختلف رنگوں سے مزین کرنے کے عمل کو سماجی طبقات میں امتیاز کرنے کے واسطے اپنایا گیا۔ اس سلسلے میں استعمال ہونے والے روغنِ ناخن کی تیاری میں شہد کے چھتے کا موم ، انڈے کی سفیدی ، پھولوں کی پتیاں استعمال کی جاتی تھیں۔ یہ لوگ مذکورہ مرکب کے اندر اپنے ناخنوں کو کئی گھنٹوں تک بھگو کر رکھتے تھے تاکہ مطلوبہ رنگ حاصل ہو سکے جو غالبا چاندی جیسا یا سنہرا ہوتا تھا۔

سال 1300 ق م میں مصری خواتین نے مہندی سے ناخنوں کو رنگنا شروع کیا۔ یہ روغن بھی معاشرے میں طبقاتی امتیاز کا ذریعہ تھا جہاں عام طبقہ مدہم رنگوں کا استعمال کرتا تھا جب کہ اشرافیہ میں سُرخ رنگ کو اپنایا جاتا تھا۔ نیفرتیتی کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ناخنوں کو گہرے سرخ رنگ سے مزین کرتی تھی جب کہ کلوپیٹرا ہلکے سرخ رنگ کو ترجیح دیتی تھی۔

یورپ میں وکٹورین دور میں صاف شفاف ناخنوں کا فیشن چھا گیا جہاں ناخنوں پر خوشبو دار سُرخ تیل لگایا جاتا تھا جب کہ روغن کو انگلیوں کے اطراف نظر آنے والے میل کو چھپانے کے واسطے استعمال میں لایا جاتا تھا۔

1932 میں نیل پالش کے پہلے برانڈ کا اندراج ہوا جب چارل ریوسن نے گاڑیوں کے رنگ سے متاثر ہو کر اسی سے ناخنوں پر لگائے جانے کے قابل ایک روغن کی قسم تیار کیا۔

یہ برانڈ کاسمیٹکس کی معروف کمپنیRevlon نے متعارف کرایا۔

1940 میں ہالی وُڈ کی اداکاراؤں میں نیل پالش کا فیشن ظاہر ہوا اور عرصے میں سرخ رنگ سب سے زیادہ مروج رہا۔

1972 میں پہلی مرتبہ معدنی اجزاء کی حامل نیل پالش منظر عام پر آئی جس نے اس شعبے میں رنگوں کی بے تحاشہ اقسام اور نیل پالش کی منفرد انواع کے لیے راہیں کھول دیں۔

سال 1976 میں پیرس میں Oryl نامی کمپنی نے پہلی مرتبہ French Manucure کو متعارف کرایا جو آج تک دنیا بھر میں استعمال کیا جا رہا ہے۔

سال 2011 میں لمبے عرصے تک باقی رہنے والی نیل پالش متعارف ہوئی۔ یہ لگانے کے بعد 60 سیکنڈوں میں خشک ہو جاتی ہے اور پھر 3 ہفتوں تک باقی رہتی ہے۔