.

ماہ رمضان کے روزوں کے بعد.. آپ کا جسم خون کی نئی رگوں کا مالک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ماہ رمضان کے روزوں کے بعد آپ کا جسم خون کی نئی رگوں کا حامل ہوتا ہے۔ یہ بات مصر کی society of allergy and clinical immunology کے رکن ڈاکٹر مجدی بدران نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے گفتگو کرتے ہوئے بتائی۔ مصری طبیب کے مطابق انسانی جسم میں رگوں کا جال درج ذیل پر مشتمل ہوتا ہے :

* شریانیں : یہ رگیں جسمانی اعضاء کو خون پہنچاتی ہیں۔
* وریدیں : یہ رگیں جسمانی اعضاء سے نامیاتی زہریلے مواد اور قابلِ تلف مواد لے کر آتی ہیں۔
* خون کی نالیاں : خون کی مجموعی رگوں کا 80% حصّہ ان نالیوں پر ہی مشتمل ہوتا ہے۔ یہ انسانی جسم میں سب سے چھوٹی رگیں ہوتی ہیں۔
* بلڈ برین بیریئر : یہ نظام دماغ میں پایا جاتا ہے اور بعض بنیادی مواد مثلا آکسیجن پانی اور گلوکوز کو دماغ تک پہنچنے کی اجازت دیتا ہے تاہم جراثیم اور خطرناک مواد کو روک دیتا ہے۔

بدران نے باور کرایا کہ روزے سے Ghrelin ہارمون کی ترکیز میں اضافہ ہو جاتا ہے۔ یہ انسانی جسم میں بھوک کا احساس پیدا کرنے والا ہارمون ہے۔ اس کے نتیجے میں انسانی جسم نامیاتی زہریلے مواد سے چھٹکارہ پاتا ہے اور چربی کے جل جانے کا عمل بھی ہوتا ہے۔ بدران کے مطابق میٹابولزم کو منظم کرنے میں اس کا اہم کردار ہوتا ہے جب کہ Ghrelin ہارمون کا انسانی دل اور خون کی رگوں سے مضبوط تعلق ہوتا ہے۔

ڈاکٹر بدران نے دل پر اور خون کی رگوں کی صفائی میں Ghrelin کے اثر کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ یہ خون کے خلیوں کے اندر کیلشیئم کی ترکیز منظم کرنے پر کام کرتا ہے اور دل کے خلیوں کو مرنے سے بچاتا ہے۔ اس کے علاوہ دل کے خلیوں کو free electrolytes کے اثرات سے محفوظ رکھتا ہے اور خون کی رگوں میں اور ان کے باہر سیال مادوں کے حجم کو بھی کنٹرول کرتا ہے۔

روزے کے دوران Ghrelin خون کی رگوں کی ساخت کو مضبوط کرتا ہے۔ بدران کا کہنا ہے کہ طبی تحقیقی مطالعوں سے یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ Ghrelin ہارمون اور خون کی رگوں کی ساخت کے درمیان مضبوط تعلق ہے۔ یہ خون کی رگوں کا ایک جدید جانبی جال فراہم کرتا ہے جو ان tissues کو خون فراہم کرتا ہے جو مرنے کے خطرے سے دوچار ہوتے ہیں۔ یہ دل کو خون فراہم کرنے والی شریانوں کا عمل مضبوط بناتا ہے اور خون کی رگوں میں انفیکشن کو روکتا ہے۔

خون کی رگوں میں اندر کی جانب موجود خلیوں کے حوالے سے بھی Ghrelin کے ایک دوسرے کردار کا انکشاف ہوا ہے۔ یہ خلیے اندر سے vascular cavity کو ڈھانپ کر رکھتے ہیں اور ڈھانپے جانے والے مجموعی رقبے کا حجم تقریبا 1000 مربع میٹر ہے۔