اسمارٹ فون کو قریب رکھنے کے انسانی دماغ پر اثرات ؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

ایک نئی سائنسی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ اسمارٹ فون کے کسی کمرے میں رکھے ہونے سے، خواہ فون بند ہی کیوں نہ ہو، اس کمرے میں موجود افراد کی ذہنی صلاحیتوں پر منفی اثر پڑتا ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ اسمارٹ فون ہمارے لیے Brain Drain کے طور پر کام کرتا ہے کیوں کہ ہمارے دماغ کا ایک حصہ مستقل طور پر فون کے بارے میں سوچتا رہتا ہے۔

برطانوی اخبار "ڈیلی میل" کے مطابق اسمارٹ فون کے کمرے میں ہونے کے نتیجے میں وہاں موجود لوگوں کو آسان سا کام انجام دینے میں بھی کافی جد و جہد کرنا پڑتی ہے۔

لوگ یہ محسوس کرتے ہیں کہ ان کی تمام تر توجہ اپنے کام پر ہے تاہم اسمارٹ فون غیر محسوس طریقے سے ان کے دماغ کے کام کرنے کے عمل کو محدود کر دیتا ہے۔

ٹیکساس یونی ورسٹی میں ماہر تجارت اور مذکورہ تحقیق کے مرکزی مؤلف داکٹر ایڈریان وارڈ کے مطابق " تحقیق کے دوران ہم نے دیکھا کہ جب بھی اسمارٹ فون زیادہ قابلِ توجہ بنا تو تحقیق میں شامل افراد کی ادراک اور احساس کی صلاحیت میں کمی آئی"۔

یونی ورسٹی کی ٹیم نے اپنی تحقیق میں اسمارٹ فون استعمال کرنے والے 800 کے قریب افراد کو تجربات میں شامل کیا تا کہ پہلی مرتبہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ اسمارٹ فون کے قریب ہونے سے دماغ کے کام کرنے کی صلاحیت کس طرح متاثر ہوتی ہے۔

ایک تجربے میں تمام شرکاء کو کمپیوٹر پر بٹھا کر انہیں چھوٹے اور مختصر سلسلہ وار امتحانات میں حصہ لینے کے لیے کہا گیا جن میں اچھے نتائج کے لیے مکمل دماغی توجہ اور ارتکاز کی ضرورت تھی۔ ان امتحانات کا مقصد یہ جاننا تھا کہ اس کو حل کرنے والے شخص کی ادراک اور احساس کی موجودہ صلاحیت کتنی ہے۔

تجربے سے قبل تمام شرکاء کو فوری ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے موبائل فون کو Silent Mode پر کر دیں اور اس کے بعد اپنی ڈیسک پر رخ پلٹ کر رکھ دیں یا اپنی جیبوں میں یا بیگوں میں رکھ لیں اور یا پھر دوسرے کمرے میں رکھ دیں۔

محققین کے سامنے یہ بات آئی کہ جن شرکاء نے اپنا فون دوسرے کمرے میں رکھا تھا انہوں نے نتائج میں اپنے اُن ساتھیوں کو بہت پیچھے چھوڑ دیا جنہوں نے اپنا فون ڈیسک پر رکھا۔ یہ شرکاء اُن ساتھیوں سے بھی آگے رہے جنہوں نے اپنا فون جیبوں یا بیگوں میں رکھا تھا تاہم ان کے درمیان مارجن کم رہا۔

ایک دوسرے تجربے میں محققین نے اس بات کو جانچا کہ شرکاء اپنی عام زندگی کا دن گزارنے کے لیے اسمارٹ فون پر کتنا انحصار کرتے ہیں اور اس کی ضرورت کتنی شدت سے محسوس کرتے ہیں۔ شرکاء کو سابقہ طریقے پر ہی کمپیوٹر پر مختصر امتحانات کو حل کرنے کے لیے کہا گیا۔ شرکاء کے پہلے گروپ کو ہدایت دی گئی کہ وہ اپنے اسمارٹ فون کو نظروں کے سامنے ڈیسک پر ، یا جیبوں میں ، بیگوں میں اور یا پھر دوسرے کمرے میں رکھ دیں۔ اس تجربے میں بعض شرکاء کو اپنا فون بند کر دینے کی بھی ہدایت دی گئی۔

محققین نے یہ دیکھا کہ جن شرکاء کی زیادہ توجہ اپنے اسمارٹ فون کی طرف تھی اِن کے نتائج اپنے اُن ساتھیوں کے مقابلے میں کافی خراب تھے جنہوں نے اپنے اسمارٹ فون پر کم انحصار کیا۔

ڈاکٹر وارڈ اور ان کی ٹیم اس نتیجے پر پہنچی کہ اسمارٹ فون کے آن یا آف ہونے سے یا پھر سیدھے یا الٹے رخ پر رکھے ہونے سے کوئی فرق نہیں پڑا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں