.

قیدیوں سے خالی جیل کا یکسر مختلف مقصد کے لیے استعمال!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہالینڈ میں حکام نے ملک میں جرائم کی شرح میں کمی آنے کے بعد 27 جیلوں اور عدالتی اداروں کو بند کر دیا ہے تاہم وہ خالی جیلوں سے کھیلوں کی تفریحات کے لیے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

ہالینڈ کے جنوب واقع "بریڈا" جیل 130 برس پہلے تعمیر کی گئی تھی تاہم اس وقت وہ قیدیوں سے خالی ہے۔ ملک میں جرائم کی شرح میں کمی آنے کے بعد گزشتہ دہائی کے دوران مجرموں کی تعداد 20% کم ہو گئی۔

ہالینڈ کی وزارت داخلہ میں پراپرٹی پروجیکٹس کی ڈائریکٹر انیلوس وان پوکسٹل نے واضح کیا کہ "قیدیوں کی تعداد میں کمی سزاؤں میں کمی کے معنی میں نہیں ہے۔ یقینا مختلف طریقے اپنا کر جیل خانوں کی نوعیت میں تبدیلی لائی گئی ہے"۔

ہالینڈ کے حکام نے عمارت سے فائدہ اٹھانے کے واسطے خالی جیل کے دروازوں کو پھر سے مقفل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بعد ازاں ان دروازوں کے پیچھے 350 رضا کار اور 80 اداکار بالغان کے ایک کھیل میں حصہ لیں گے جس کو "جیل سے فرار" کا نام دیا گیا ہے۔

ادھر اس مقابلے کے ذمے دار رِک سنیپل بروک نے واضح کیا کہ وہ جیلوں کے متعلق روایتی فلموں کو حقیقی جیل ، بہت سے اداکار اور کھلاڑیوں اور بعض اسپیشل ایفیکٹس کے ذریعے حقیقت میں منتقل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

ہالینڈ میں جیلوں کی بندش اپنی نوعیت کا پہلا تجربہ نہیں ہے۔ اس سے قبل 2011 سے 2013 کے درمیان سوئس حکام نے بھی چار جیلوں کو بند کر دیا تھا۔