شاہ سلمان نے شہید سوڈانی فوجی کی والد کے حج کی خواہش پوری کردی

شہید نورین فضل اللہ نے اپنے والد سے حج کرانے کا وعدہ کیا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سوڈان سے تعلق رکھنے والے ایک فوجی نے گذشتہ برس عرب اتحادی فوج کے تحت یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کی لڑائی میں حصہ لیا مگر وہ اس میں جام شہادت نوش کرگئے۔ سوڈانی سارجنٹ النورین فضل اللہ نے اپنے والد سے وعدہ کیا تھا کہ وہ انہیں حج کرائے گا۔ والد کو حج کرانے کا وعدہ کرنے کے چند ہی ماہ بعد نورین یمن میں جنگ میں شہید ہوگئے مگر ان کے والد کے حج کی خواہش خادم الحرمین الشریفین نے پوری کردی۔

نورین فضل اللہ شہید کے والد 72 سالہ فضل اللہ عمر نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بیٹے کی یمن میں شہادت کے تین ماہ بعد ایک خرطون میں جبل اولیا قصبے کے ایک عہدیدار نے مجھے خصوصی حج اسکیم کے تحت حج کے سفر کی خوش خبری سنائی۔ عہدیدار نے بتایا کہ شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے سوڈانی فوج کے یمن میں شہید اور زخمی ہونے والے اہلکاروں کے والدین کو حج کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جس میں آپ کا نام بھی شامل ہے۔

فضل اللہ عمر کا کہنا ہے کہ شاہ سلمان نے میرے بیٹے اور میری دونوں کی خواہش پوری کی ہے۔ میں حرمین شریفین کی زیارت کا متمنی تھا اور بیٹے نے بھی مجھے حج کرانے کا وعدہ کیا تھا۔

بیٹے کی شہادت پر اپنے رد عمل کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں فضل اللہ عمر نے کہا کہ میں نے بیٹے کے مارے جانے کی خبر کو خوشی سے قبول کیا۔ میں اس کی شہادت پر راضی ہوں۔ اس کی شہادت نے مجھے حج کا موقع دیا۔ میں دیار مقدس میں اس کے لیے رحمت، مغفرت اور تمام مسلمانوں کی مغفرت کی دعائیں کرتا رہا۔ یہ بیٹے کی شہادت ہی کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے حج اسکیم کے تحت فریضہ حج کی ادائی کا موقع دینے پر شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کا تہہ دل سے شکریہ ادا کیا۔

خیال رہے کہ امسال سوڈان کے شہداء اور زخمیوں کے 250 اقارب کا خادم الحرمین الشریفین حج اسکیم کے تحت حج کرایا گیا۔ اسی طرح خصوصی حج اسکیم کے تحت مصر اور فلسطینی شہداء کے اقارب کو بھی حج کرایا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں