.

سعودی نوجوان کی بہادری ، جلتی کار کو گیس اسٹیشن سے دور لے گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ایک بہادر نوجوان نے اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر کئی زندگیوں اور ایک گیس اسٹیشن کو تباہی سے بچالیا ہے۔الریاض کے گورنر شہزادہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز نے اس کو اس کمال بہادری پر انعام سے نوازا ہے اور اس کی ستائش کی ہے۔

یہ نوجوان سلطان محمد الدوسری اپنی ٹویوٹا لینڈ کروزر پر ایک گیس اسٹیشن پر آیا تھا۔وہاں اس نے ایک دوسری کار کو آگ کی لپیٹ میں دیکھا تو اس نے ایک لمحے میں یہ فیصلہ کیا کہ اس کار کو گیس اسٹیشن سے ہٹانا چاہیے، ورنہ بڑی تباہی ہوگی۔چناں چہ وہ اپنی لینڈ کروز سے دھکا لگا کر اس کار کو گیس اسٹیشن سے دور لے گیا۔

سلطان الدوسری نے العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ’’ جب اس کار کو آگ لگی تو میں نے دیکھا کہ اس کا ڈرائیور (مالک) اس کو وہیں کھڑا کرکے باہر نکل آیا ہے اور پھر فوراً کار آگ کے شعلوں کی لپیٹ میں تھی‘‘۔

’’اس لمحے میں نے خود سے پوچھاکہ اگر آگ نے گیس اسٹیشن کے ٹینکوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا تو پھر کیا ہوگا؟ مجھے اس کا کوئی جواب نہیں ملا تو پھر میں نے ایک فیصلہ کیا اور اپنی کار کو جلنے والی کار کے ساتھ لگا دیا اور اس کے ذریعے دھکا لگا کر اس کو گیس اسٹیشن کی حدود سے باہر لے گیا‘‘۔

نوجوان نے مزید بتایا کہ ’’جب میں کار کو دھکا لگا کر گیس اسٹیشن سے باہر لے جارہا تھا تو میں نے دیکھا کہ میری لینڈ کروزر کے دونوں اگلے ٹائروں کو بھی آگ لگ گئی ہے۔اس لیے میں اس کو فوری طور پر اسٹیشن سے دور لے گیا تا کہ ٹائروں کولگی آگ کو بجھا یا جاسکے‘‘۔

گورنر شہزادہ فیصل بن بندر نے الدوسری کے بہادری اور بے خوفی کے اس مظاہرے کو سراہا ہے اور اس کا شکریہ ادا کیا ہے ۔انھوں نے کہا کہ قوم کو اپنے اس نوجوان پر فخر ہے جس نے گیس اسٹیشن اور قیمتی انسانی جانوں کو بچانے کے لیے اپنی جان کو خطرے میں ڈال دیا تھا۔