.

بشار الاسد کی قریبی عزیزہ نے باوردی فوجی پیٹ ڈالا، جانئے کیوں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی صدر بشار الاسد کی ایک قریبی رشتے دار خاتون نے فٹ بال کھلاڑیوں کے ساتھ سیلفی بنانے کی اجازت نہ دینے پر اپنے ہی ملک کے فوجی کو دھو ڈالا۔

العربیہ ٹی وی کے مطابق شام کے صدر بشار الاسد کی ایک کزن کی فوجی کو تشدد کا نشانہ بنانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔ یہ واقعہ اللاذقیہ میں فٹبال ٹیم کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں پیش آیا جس میں قومی ہیروز کےساتھ سلیفی لینے سے منع کرنے پر ایک خاتون نے سیکورٹی پر مامور فوجی کو تھپڑ مارا اور اسے ‘جانور’ کہہ ڈالا۔

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ خاتون اسٹیج پر پہنچ کر کھلاڑیوں کے ساتھ تصاویر بنانے کے لیے آگے بڑھی تو سیکورٹی اہلکار نے اسے روک دیا جس پر خاتون سیخ پا ہو گئی اور اسے براُ بھلا کہنے لگی۔ بدکلامی سے دل نہ بھرا تو خاتون نے فوجی پر چڑھائی کر دی اور بھری محفل میں تھپڑ رسید کر دیا۔

فوجی کے ساتھ خاتون کو جھگڑتا دیکھ کر آس پاس کھڑے لوگوں نے مداخلت کرتے ہوئے بیچ بچاو کرایا اور فوجی کی خاتون سے جان چھڑائی۔

ویڈیو وائرل ہونے کے بعد مذکورہ خاتون کی شناخت آیا عمار الاسد کے نام سے ہوئی جو کہ شام کے صدر کی رشتہ دار ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ آیا عمار الاسد شامی صدر کی کزن ہیں اور فوجی کے ساتھ بدسلوکی پر اس کے خلاف کسی قسم کی کارروائی نہیں کی گئی۔