.

کیا ہم اب تک غلط اوقات میں کافی پیتے رہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

آپ یقین کریں یا نہ کریں، غالبا آپ اب تک تمام عمر غلط طریقے سے کافی پیتے رہے ہیں!

کافی پینے کے اوقات کا اُس چُستی پر گہرا اثر ہوتا ہے جو یہ کافی آپ کے جسم میں لاتی ہے۔ اگر آپ روئے زمین پر دوسری سب سے زیادہ استعمال ہونے والی جنس کو صبح نیند سے بیدار ہونے کے لیے استعمال کرتے ہیں تو پھر آپ کو اس عادت پر نظر ثانی کرنا ہو گی۔

صحت کے امور سے متعلق ویب سائٹ "Care2" کے مطابق آپ کا جسم صبح کے وقت دباؤ کا ایک ہارمون cortisol پیدا کرتا ہے جو آپ کو قدرتی طور پر نیند سے بیدار کرتا ہے۔

کارٹیزول ہارمون کی اہمیت ؟

آپ جس وقت بھی سو کر اٹھتے ہیں جسم میں کارٹیزول کی سطح بتدریج 50% بلند ہو جاتی ہے۔ ہمارے جسم کی حیاتیاتی گھڑی کے مطابق صبح 8 سے 9 بجے کے درمیان کارٹیزول کی سطح بلند ترین ہوتی ہے۔

اس کا مطلب یہ ہوا کہ مذکورہ اوقات میں آپ سب سے زیادہ چاق و چوبند اور چوکنا ہوں گے۔

اگر آپ کچھ عرصہ کیفین پینا روک دیں تو آپ بیدار ہونے کے ایک گھنٹے کے بعد توانائی اور چستی کی اس واضح تبدیلی کو محسوس کریں گے۔ یہ وہ ہی اوقات ہوتے ہیں جب زیادہ تر لوگوں کو دودھ والی کافی پینے کی شدید رغبت محسوس ہوتی ہے۔

مشکل یہ ہے کہ کیفین کا پینا اس وقت آپ کو بیدار کرنے میں درحقیقت کوئی مدد نہیں کرتا جب کارٹیزول کی سطح پہلے ہی بلند ہوتی ہے۔

کارٹیزول کیفین کے مطلوبہ اثرات کو کم کر دیتا ہے اسی لیے کارٹیزول کی بلند سطح کے وقت کافی پینے سے برعکس نتائج برآمد ہوتے ہیں۔

تو پھر یہ کیسے ممکن ہے کہ کافی کے مگ سے لطف اندوز ہونے کے ساتھ ساتھ آپ کا جسم مکمل چستی کا مظاہرہ بھی کر سکے؟

اس کا بہترین اور سادہ سا حل یہ ہے کہ آپ بیدار ہونے کے ایک گھنٹے بعد کافی سے لطف اندوز ہوں جب تک آپ کا جسم خود سے کافی متحرک ہو چکا ہوگا.. یا پھر آپ مثلا صبح 9 بجے کے بعد کافی پیجیے اور خود کو صبح کے اوقات میں کافی کے بغیر بیدار ہونے کی عادت ڈالیے۔ ابتدا میں تھوڑی دشواری پیش آئے گی مگر اس کے بعد آپ بہترین نتائج محسوس کریں گے۔