.

جامعہ الازہر کے سربراہ ڈاکٹر شیخ احمد طیب 500 بااثر مسلم شخصیات میں پہلے نمبر پر

فہرست میں 33 پاکستانی شہریوں کے نام بھی شامل کیے گئے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اردن کے رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹڈیز سینٹر نے دنیا بھر کی 500 با اثر ترین مسلم شخصیات سے متعلق اپنی 2018 کی رپورٹ جاری کردی۔ دو سو بہتر صفحات پر مشتمل اسلامک اسٹڈیز سینٹر کی رپورٹ کے مطابق مصر کی معروف درس گاہ جامعہ الازہر کے پروفیسر ڈاکٹر شیخ احمد طیب اسلامی دنیا کی سب سے بااثر شخصیت قرار پائے ہیں۔

معاصر عزیز ڈان اردو نے رائل اسلامک اسٹریٹجک اسٹڈیز سینٹر کی رپورٹ کے حوالے سے بتایا ہے کہ سینٹر نے سعودی عرب کے فرماں روا سلمان بن عبدالعزیز کو دوسرے نمبر پر، اردن کے بادشاہ عبداللہ ثانی کو تیسرے، ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کو چوتھے، ترکی کے صدر رجب طیب اردوگان کو پانچویں، مراکش کے بادشاہ محمد چھٹے اور پاکستان کی معروف مذہبی شخصیت مفتی تقی عثمانی کو فہرست میں ساتویں نمبر پر رکھا ہے۔

اس کے علاوہ اسلامی ممالک کی 500 بااثر شخصیات میں پاکستان کے سابق وزیراعظم نوازشریف، پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان، جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ فضل الرحمن اور ملالہ یوسفزئی سمیت درجنوں پاکستانیوں کو بھی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔

پاکستان میں تبلیغی جماعت کے سربراہ حاجی محمد عبدالوہاب، علامہ ساجد نقوی اورجماعت اسلامی کے سراج الحق کو بھی بااثر اسلامی شخصیات میں شامل کیا گیا ہے جبکہ علامہ الیاس قادری، مولانا طارق جمیل، پروفیسر عطاءالرحمن، ڈاکٹر عبدالقدیر خان کا تذکرہ بھی مذکورہ رپورٹ میں موجود ہے۔

ادھر فلاحی کاموں کے حوالے سے مرحوم سماجی کارکن عبدالستار ایدھی کی اہلیہ بلقیس ایدھی اور انسانی حقوق کی آواز بلند کرنے کے سلسلے میں عاصمہ جہانگیر کا تذکرہ بھی رپورٹ میں موجود ہے۔ اسلامی ممالک کی بااثر آوازوں میں پاکستان سے گلوکارہ عابدہ پروین اور نعت خواں اویس رضا قادری کو بھی 500 افراد کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔