.

سعد الحریری کے ٹی وی انٹرویو کے دوران اچانک کون شخص نمودار ہوگیا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے مستعفی وزیراعظم سعد حریری سے ٹیلی ویژن انٹرویو کے دوران اچانک ایک پُراسرار شخص نمودار گیا جس سے لاکھوں ناظرین کے ذہنوں میں مختلف سوال پیدا ہوگئے اور وہ اس سوچ میں پڑ گئے کہ یہ شخص کون ہوسکتا ہے؟

اس شخص نے ایک لپٹا ہوا سفید کاغذ پکڑ رکھا تھا اور اس پر ممکنہ طور پر کوئی پیغام تھا لیکن یہ کوئی نہیں جانتا کہ اس پر کیا لکھا تھا۔یہ شخص انٹرویو نگار خاتون کے بالکل پیچھے میز کے ساتھ لگ کر کھڑا ہوگیا تھا۔اس دوران سعد حریری کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں اور انھوں نے اس کی طرف غصے سے دیکھنا شروع کردیا۔

پھر انھوں نے آنکھ سے اس شخص کو اشارہ کیا اور وہ وہاں سے فوری طور پر غائب ہو گیا۔اصل واقعہ کیا ہوا تھا اور یہ شخص کون تھا،اس کی وضاحت سعد حریری کے ملکیتی مستقبل ٹی وی کی میزبان پاؤلا یعقوبیان نے کی ہے۔انھوں نے سعد حریری کو سعودی دارالحکومت الریاض میں ان کی قیام گاہ پر ان کے اس انٹرویو کی مکمل ٹپل بھیجی ہے۔

یہ انٹرویو کوئی ڈیڑھ گھنٹا جاری رہا تھا۔اس کے ختم ہونے سے صرف دو منٹ قبل پاؤلا نے وقفہ کیا اور اس کے بعد بتایا کہ یہ شخص کوئی اور نہیں بلکہ مستعفی وزیراعظم کے عملہ کا ایک رکن ہے ۔انھوں نے اس جگہ کی بھی نشان دہی کی تھی ،جہاں وہ شخص کھڑا تھا۔اس واقعے کی ویڈیو العربیہ ڈاٹ نیٹ نے بھی نشر کی ہے۔

اس خاتو ن میزبان نے یہ وضاحت نہیں کی ہے کہ اس پراسرار شخص کا کس عملہ سے تعلق تھا کیونکہ بعض لوگوں کا یہ خیال تھا کہ اس شخص کا سعودی ٹی وی چینل سے تعلق تھا اور اس نے انٹرویو کی ریکارڈنگ میں میزبان کی مدد کی تھی۔

تاہم انٹرویو نگار نے یہ وضاحت کی ہے کہ اس شخص کا کیمرے کے سامنے اس طرح اچانک آجانا ایک فنی غلطی تھی۔ البتہ اس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ یہ انٹرویو براہ راست نشر کیا جارہا تھا اور یہ پہلے سے ریکارڈ نہیں تھا کیونکہ اگر ایسا ہوتا تو اس شخص کے نمودار ہونے کے منظر کو ایڈٹ (حذف)کیا جاسکتا تھا۔