.

برطانوی خاتون جس کا دل سینے کے بجائے بیگ میں دھڑکتا ہے

سلویٰ حسین کے بیگ میں رکھے دل کا وزن قریبا سات کلو گرام ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہرانسان کا دل اس کے سینے میں ہوتا ہے لیکن آپ یہ سن کر دنگ رہ جائیں گے کہ برطانیہ میں ایک خاتون ایسی ہے جو اپنا دل ایک بیگ میں ڈالے ہمہ وقت ساتھ اٹھائے پھرتی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کی رپورٹ کے مطابق برطانوی شہر کلے ہال کی رہائشی 39سالہ سلویٰ حسین نامی اس خاتون کو 6 ماہ قبل ہارٹ اٹیک ہوا اور اس کا دل ناکارہ ہو گیا۔ وہ اس وقت گھر میں اکیلی تھی۔ اس نے ہمت کی اور خود ہی گاڑی میں بیٹھ کر محض 200 میٹر کی دوری پر اپنے فیملی ڈاکٹر کے پاس پہنچ گئی۔ وہاں سے اسے مقامی ہسپتال منتقل کیا گیا۔ جہاں چار دن تک اس کا علاج جاری رہا لیکن دل کے ناکارہ ہونے پر اسے وہاں سے ہیئر فیلڈ ہسپتال ریفر کر دیا گیا۔

ہیئر فیلڈ ہسپتال میں ڈاکٹروں نے اس کا ایک انتہائی نایاب آپریشن کیا اور اس کے سینے میں ”پاور پلاسٹک چیمبرز“ لگا دیئے جن سے دو پائپ باہر نکلتے ہیں اور باہر موجود ایک پمپ سے منسلک ہوتے ہیں۔ یہ پمپ بیٹریوں کے ذریعے چلنے والی ایک برقی موٹر سے چلتا ہے اور ان چیمبرز کو ہوا فراہم کرتا ہے۔

اس ہوا کے ذریعے چیمبرز دل کی طرح کام کرتے اور پورے جسم کو خون فراہم کرتے ہیں۔ ان میں سے چیمبر خاتون کے سینے کے اندر جبکہ پمپ، برقی موٹر اور بیٹریاں باہر ہیں۔ یہ تینوں چیزیں سلویٰ ایک بیگ میں ڈالے اپنے ساتھ اٹھائے رکھتی ہے۔ ان تمام چیزوں کا وزن لگ بھگ 7کلوگرام ہے۔ رپورٹ کے مطابق سلویٰ شاید دنیا کی واحد خاتون ہے جس کا دل اس کے جسم کے باہر ہے۔

سلویٰ کا کہنا ہے کہ ”میں خود کو دنیا کی خوش قسمت خاتون سمجھتی ہوں کہ دل ناکارہ ہونے کے بعد بھی زندہ ہوں۔ اب میرے شوہر یا کسی اور فرد کو ہمہ وقت میرے ساتھ رہنا پڑتا ہے تاہم میں اس پر بھی خوش ہوں۔“ رپورٹ کے مطابق سلویٰ کو دل کی جگہ لگائی جانے والی اس حیران کن ڈیوائس کی قیمت 86ہزار پاﺅنڈ (تقریباً 1کروڑ 28لاکھ روپے) ہے۔ امریکا میں اس طرح کا طریقہ علاوہ ایک لاکھ سولہ ہزار ڈالر تک ممکن ہے۔