.

زمین کا دو تہائی حصّہ پانی مگر صرف 1% قابلِ استعمال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پانی انسانی زندگی میں جوہری عنصر کی حیثیت رکھتا ہے اور کرہ ارض کا دو تہائی سے زیادہ حصّہ پانی پر مشتمل ہے۔ تاہم اس میں قابل استعمال پانی کا تناسب نہایت کم ہے۔

انسان نے پرانے وقتوں میں یہ جان لیا تھا کہ پانی زراعت ، معیشت اور بعد ازاں توانائی کے واسطے بنیادی عامل کی حیثیت رکھتا ہے۔

زمین کے کل رقبے کا 71% حصّہ پانی پر مشتمل ہے لیکن اس میں 97% پینے کے قابل نہیں۔ دنیا کے پانی کا 2% حصّہ پہاڑی تودوں میں موجود ہے جو پینے کے قابل ہے مگر اس کو نکالنا دشوار گزار عمل ہے۔ لہذا اس کے بعد دنیا کا صرف 1% پانی پینے کے قابل رہ جاتا ہے۔ یہ دریاؤں، جھیلوں اور زیر زمین پایا جاتا ہے اور اسے گھٹنے کے خطرے کا سامنا ہے۔

زمین کی آبادی روزانہ 10 ارب ٹن تازہ پانی استعمال کرتی ہے۔ اس تازہ پانی کا 75 سے 90 فی صد حصّہ زراعت میں استعمال ہوتا ہے۔ مثلا ایک ٹن گندم پیدا کرنے کے لیے تقریبا 1 ہزار ٹن پانی استعمال ہوتا ہے۔ علاوہ ازیں گوشت کا ٹکڑا آپ کی پلیٹ تک پہنچنے میں ہزاروں ٹن پانی استعمال کر لیتا ہے۔

کھیتوں کے جانوروں کو چارہ دینا، ان کے لیے پانی فراہم کرنا، کارخانوں اور نقل و حمل کے ٹرکوں کی دھلائی کے علاوہ خود حضرت انسان کے ہاتھوں پانی کی ایک بہت بڑی مقدار کا استعمال ہونا یہ سارا کا سارا بے تحاشہ خرچ زمین پر انسانی وجود کے لیے خطرہ بن گیا ہے۔