.

مصر: دنیا کا طویل ترین فانوس گینز بک میں شامل ہونے کے تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ماہ صیام کی مناسبت سے ایک ایسا فانوس تیار کیا گیا ہے جس کی مثال آج تک نہیں ملتی۔ اس منفرد اور طویل ترین فانوس کو گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کرنے کی امید کی جا رہی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ماہ صیام کی مناسبت سے تیار کردہ اس فانوس کی 15 منازل ہیں اور مجموعی طورپر اس کی لمبائی 50 میٹر ہے۔

مصر کی اسکندریہ گورنری کی باکوس کالونی میں شاہراہ سینما لیلیٰ میں یہ فانوس دو بلند ترین عمارتون کے درمیان معلق ہے۔ اس کے سامنے سے راہ گیروں کی آمد روفت کے ساتھ اسے دیکھنے والے زائرین کا بھی رش لگا رہتا ہے۔ لوگ اس کے ساتھ یادگاری تصاویر بناتے ہیں جب کہ انتظامیہ نے اسے گینز بک میں شامل کرنے کی درخواست دی ہے۔

اس منفرد آئیڈئے کے خالق احمد الحاجو نے’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ ماہ صیام کی تزئین وآرائش کے حوالے سے کچھ انوکھا کرنے کے بارے میں بچپن سے سوچ رہے تھے۔ ماہ رمضان کے دوران گھروں ار محلوں کو مزین کرنے کے لیے وہ فوانیس خرید کرتے۔ یہاں سے ان کے ذہن میں ایک غیر معمولی جسمات کے فانوس کی تیاری کا آئیڈیا آیا۔ ان کا کہنا ہے کہ شہریوں نے اس عظیم الشان فانوس کو بہت پسند کیا ہے اور لوگ بالخصوص بچے اسے دیکھ کر بہت خوش ہوتے ہیں۔

احمد الحاجو کا کہنا ہے کہ انہوں نے پچھلے سال اس فانوس کی تیاری پر کام شروع کیا۔ اس میں مجموعی طور پر 100 بلب لگائے گئے ہیں۔ اس کے بعد اس فانوس کو ایک کھلی جگہ پر رکھا گیا جہاں سے اسے بجلی کے ساتھ مربوط کیا گیا۔

یہ فانوس نہ صرف روشن ہوتا ہے بلکہ اس میں اسپیکر بھی لگائے گئے اورانہیں القرآن ریڈیو سے مربوط کیا گیا۔ نماز عصر کے بعد تراویح کے اختتام تک یہ روشن ہونے کے ساتھ تلاوت کلام پاک اور رمضان گیت بھی سناتا ہے جب کہ سحری کے وقت دینی دعائیں سنائی جاتی ہیں۔

ماہ صیام کے بعد عید الفطر پر بھی یہ فانوس روشن رہے گا۔ اس کے بعد عیدالاضحیٰ پر اسے دوبارہ روشن کیا جائے گا۔ فانوس کا قطر چار مربع میٹر ہے اور اس کے بالائی حصے کی لمبائی چار میٹر اور 35 سینٹی میٹر ہے۔ رواں سال اس میں بجلی کے نئے بلب لگائے گئے ہیں۔