.

’خدا کے ہاں‘ اسلامی جمہوریہ ایران کا کوئی متبادل نہیں: مشیر خامنہ ای

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کی جانب سے ایرانی عوام سےمرضی کی قیادت کے انتخاب کی تجویز پر ایرانی رجیم کے سرکردہ لیڈروں کی طرف سے ’آتشیں بیان بازی‘ کا سلسلہ جاری ہے۔

مائیک پومپیو کے بیان کے ردعمل میں ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای کے مشیر برائے عسکری امور یحییٰ رحیم صفوی نے منفرد انداز بیان اختیار کیا ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ’اللہ کے ہاں اسلامی جمہوریہ ایران کا کوئی متبادل نہیں‘۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ کرہ ارض پر موجود 194 ممالک میں ایران واحد ملک ہے جو حقیقی معنوں میں قرآن پاک کی تعلیم کے مطابق قائم ہے۔

عراق ۔ ایران جنگ کے دوران ’خرم شھر‘ کا قبضہ چھڑانے کی 36 ویں سالگرہ کی مناسبت سے منعقدہ ایک تقریب سے خطاب میں مسٹر صفوی نے کہا کہ امریکی وزیر خارجہ کے بیانات عقل وفہم سے بھی ماورا ہیں۔ خطے اور پوری دنیا نے امریکی بلیک میلنگ اور دھمکی آمیز سیاست کو مسترد کردیا ہے۔

خیال رہے کہ سوموار کے روز امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایران کے حوالے سے نئی حکمت عملی کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے ایران پر دہشت گردی کی پشت پناہی اور خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کا الزام عاید کیا۔ انہوں نے واضح کیا کہ امریکا اور اس کے حلیف ایران کو اس کے جوہری اور میزائل پروگرام سے باز رکھنے کے لیے سخت ترین معاشی پابندیاں عاید کریں گے۔ اس کے ساتھ انہوں نے ایران میں حکومت کے خلاف عوامی احتجاج کی تحریک کی بھرپور حمایت کرنے کے عزم کا بھی اعادہ کیا۔

میجر جنرل رحیم صفوی نے کہا کہ چالیس سال سے جاری سازشوں کے باوجود ایران بہ حیثیت ملک اور ایرانی بہ حیثیت قوم پہلے سے زیادہ مضبوط ہوئے ہیں۔ انہوں نے الزام عاید کیا کہ خطے میں مداخلت کا الزام عاید کرنے والا امریکا خود سات سمندر پار سے مشرق وسطیٰ میں مداخلت کر رہا ہے۔ خطے میں ایران کے بڑھتے اثر ونفوذ کو کم کرنے اور ایران کے اقتصادی مفادات کو نقصان پہنچانے کی امریکی سازشیں بری طرح ناکام ہوئی ہیں۔

امریکا کو مداخلت کا کوئی حق نہیں

امریکی وزیر رجہ کی طرف سے ایران پر 12 شرائط عاید کیے جانے کی جانب اشارہ کرتےہوئے سپریم لیڈر کے مشیر نے کہا کہ امریکی مداخلت کار اور مغربی ایشیا میں ظلم کو فروغ دینے کے مرتکب ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عراقی شیعہ ملیشیا الحشد الشعبی کو اپنی مرضی کے مطابق کام کرنے کا حق ہے اور امریکا کو اس کے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا کوئی حق نہیں۔

خیال رہے کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ایران پر زور دیا تھا کہ وہ اقتصادی پابندیوں سے بچنے کے لیے دہشت گردی کی مدد بند کرے۔ یمن کے حوثی باغیوں، لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ، شام او دیگر ملکوں میں مداخلت سے باز آئے۔ ایران نے امریکی حکومت کی شرائط یکسر مسترد کر دی ہیں۔