.

مسجد نبوی میں سکیورٹی اہل کاروں کی خدمات پر ایک نظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مسجد نبوی میں آنے والے زائرین کی نظروں میں سعودی سکیورٹی اہل کار نمایاں ترین حیثیت کے حامل نظر آتے ہیں۔ یہ اہل کار مسجد کے تمام حصوں اور راستوں میں خدمات انجام دیتے ہوئے عبادت کے لیے پُرسکون ماحول یقینی بنانے میں مصروف عمل ہوتے ہیں۔

اس حوالے سے ایک سکیورٹی افسر نے العربیہ نیوز چینل کو بتایا کہ تمام بازار اور دکانیں بھی سکیورٹی اہل کاروں کی خفیہ اور اعلانیہ موجودگی سے مستفید ہوتی ہیں۔ اس دوران ٹریفک کی روانی جاری رکھنے پر بھی خصوصی توجہ دی جاتی ہے۔

مسجد نبوی میں اسپیشل فورسز کے سربراہ میجر جنرل عبدالرحمن المشحم اور ان کے ساتھی مسجد نبوی کا رخ کرنے والوں کی سکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے ہمہ وقت سرگرم رہتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ "ہمارا کام ، جگہ اور وقت سب متعین ہے۔ دنیا بھر سے مختلف رنگ و نسل اور ثقافت کے حامل افراد کی آمد کے باوجود اللہ کے فضل سے گزشتہ ایک برس سے سکیورٹی اہل کاروں کی تندہی اور چابک دستی مزید قابل تحسین ہو گئی ہے"۔

مسجد نبوی میں باب السلام کے راستے سے آنے والے زائرین کی آمد و رفت کو منظّم رکھنے پر خصوصی توجہ دی جاتی ہے تا کہ روضہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم پر سلام کے واسطے مواجہہ شریف آنے والوں کو کسی قسم کی دھکم پیل کا سامنا نہ ہو۔ اس کے علاوہ نئے انتظامات کے نتیجے میں اب مواجہہ شریف پر آنے والوں اور پہلی صف میں موجود افراد کے درمیان جگہ کی کوئی تنگی پیدا نہیں ہوتی ہے۔

میجر جنرل عبدالرحمن المشحم کے مطابق مسجد نبوی میں امام کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے مُصلّے پر واپس لانے کے سبب باب السلام سے مواجہہ شریف پر درود و سلام کی غرض سے آنے والے افراد کے گزرنے میں بڑی سہولت پیدا ہو گئی ہے۔

رمضان مبارک میں مسجد نبوی میں انسانوں کا ایک سمندر اُمڈ آتا ہے۔ تاہم اس دوران بھی رات اور دن مختلف نوعیت کی خدمات زائرین اور نمازیوں کے جمِ غفیر کا استقبال کرتی نظر آتی ہیں۔