.

مسجد نبوی کے قریب پولیس اہلکار پر تشدد کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی پولیس اور ہائی وے سیکیورٹی حکام نے مدینہ منورہ میں مسجد نبوی کے قریب واقع جنت البقیع قبرستان کے پاس خدمات سرانجام دینے والے ایک پولیس اہلکار پر تشدد کرنے والے دو افراد کو حراست میں لے لیا ہے۔ اس واقعہ کی اطلاع سماجی رابطہ کی ویب سائٹس پر وائرل ہونے والی ویڈیوز کے بعد ملی جس پر مملکت کے ڈپٹی اٹارنی جنرل نے تشدد کرنے والے افراد کی گرفتاری کا حکم جاری کیا۔

جنرل سیکیورٹی کے ترجمان نے بتایا کہ ایک گاڑی میں سوار دو افراد نے مدینہ منورہ کی شاہ فیصل شاہراہ اور شاہ عبدالعزیز شاہراہ انٹرچینج پر اپنی ڈیوٹی سرانجام دینے والے سعودی ٹریفک پولیس کے اہلکار پر اندھا دھند تشدد کر دیا۔

تشدد کے اس واقعہ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی جس میں متعدد افراد مدنیہ منورہ میں ایک ٹریفک اہلکار پر حملہ آور ہوتے دیکھے جا سکتے ہیں۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کار میں سوار ایک شخص حملہ آوروں کو کچھ کہہ رہا ہے جبکہ تشدد کا شکار بننے والا خود کو بچانے کی کوشش کر رہا ہے تاکہ معاملہ طول نہ پکڑے۔

ایک دوسری ویڈیو میں سیکیورٹی اہلکار اپنے ساتھی کو حملہ آور سے بچانے کی کوشش کر رہا ہے۔

ویڈیو وائرل ہوتے ہی مدینہ منورہ کے گورنر شہزادہ فیصل بن سلمان نے حکم دیا کہ ٹریفک پولیس اہلکار کو مارنے والے نامعلوم افراد کو گرفتار کیا جائے جس کے بعد حملہ آوروں کو حراست میں لے لیا گیا۔