برطانوی اسکول نے عالمی کپ کے سبب بچوں کو فٹبال کھیلنے سے روک دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ کے قصبے کولچسٹر میں "ہوم فارم" پرائمری اسکول کے پرنسپل نے ایک ہفتے کے لیے اسکول کے طلبہ کو فٹبال کھیلنے سے روک دیا ہے۔ یہ فیصلہ بچوں کی جانب سے ظاہر ہونے والے اُن خراب رویّوں کے سبب کیا گیا جو عالمی کپ فٹبال کے میچوں میں شریک نامور کھلاڑیوں کی نقل کرتے ہوئے سامنے آئے۔

اسکول انتظامیہ کے مشاہدے میں یہ بات آئی کہ بچّے کھیل کے دوران اختلاف اور جھگڑے کی صورت میں بہت اونچی آواز کے ساتھ لڑتے ہیں۔ ساتھ ہی یہ بات بھی سامنے آئی کہ بچّے کھیل کو "ضرورت سے زیادہ سنجیدگی" سے لے رہے ہیں۔ اس دوران عالمی کپ فٹبال میں شریک ٹیموں اور ان کے کھلاڑیوں کا انداز اپنانے کی کوشش کی جا رہی تھی۔

اسکول انتظامیہ کے مطابق مقرر کردہ قواعد و ضوابط کی پابندی کرنے پر آمادہ ہونے کی صورت میں اسکول کے بچّے دوبارہ سے فٹبال کھیل سکتے ہیں۔

برطانیہ میں اخباری رپورٹوں کے مطابق اسکول کے پرنسپل رچرڈ پوٹر کا کہنا ہے کہ وہ "بچوں کی اس بات پر حوصلہ افزائی چاہتے ہیں کہ وہ منصفانہ طریقے سے کھیل کو کھیلیں اور اس دوران اخلاقیات اور کھیل کی رُوح کا خیال رکھیں۔ ان بچوں کی عمریں محض چار سے گیارہ برس کے درمیان ہیں اور یہ لوگ بڑے کھلاڑیوں کی نقل کر رہے ہیں۔ اس کے نتیجے میں بہت سی تلخ کلامیاں سامنے آتی ہیں"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں