.

سوڈان میں تعینات اطالوی سفیر نےعوام دوستی کی عمدہ مثال کیسے قائم کی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر ایک فوٹیج وائرل ہوئی ہے جس میں سوڈان میں متعین اطالوی سفیرکو سوڈان کا قومی لباس زیب تن کیے، آٹو رکشہ چلاتے اور عام لوگوں کے ساتھ گپ شپ لگاتے دیکھا جا سکتا ہے۔ سوشل میڈیا پر ان کے اس اقدام کو سراہا جا رہا ہے اور اسے ایک غیر ملکی سفیر کی سوڈانی عوام کے ساتھ دوستی کی عمدہ مثال کے طور پر پیش کیا جا رہا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اطالوی سفیر فاپریزیو لوبیسا نے سوڈان کا قومی لباس"جلابیہ" پہنا اور خرطوم کی شاہرائوں پر رکشہ بھی چلایا۔ اس موقع ان کی اہلیہ کو بھی دیکھا جا سکتا ہے جو سوڈان کے خواتین کے لباس میں نظر آ رہی ہیں۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی فوٹیج کےمطابق سوڈان میں اطالوی سفیر کو عام شہریوں سے ملتے اور ان سے گپ شپ لگاتے دیکھا جاسکتا ہے۔ اطالوی سفیرکی طرف سے سوڈان کی عوام سے گھل جانے پر سوشل میڈیا پر مثبت رد عمل سامنے آیا ہے اور شہریوں نے اطالوی سفیر کی اس عوام دوست فکر کو سراہا ہے۔

ایک دوسری فوٹیج میں اطالوی سفیر کو سوڈان کے مقامی لباس میں کافی کی دکانوں اور سڑکوں پر چلتے دیکھا جاسکتا ہے۔ وہ مقامی سوڈانی لہجے میں لوگوں سے گپ شپ بھی لگا رہے ہیں۔

خیال رہے کہ سوڈان میں اٹلی کے سفیر کو عوام دوست شخصیت کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ وہ عموما سماجی نوعیت کی تقریبات میں بھی بے خوف شرکت کرتے ہیں۔