فیس بک کے بعد ٹویٹر نے بھی ایران نواز جعلی اکاونٹس بند کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ ’’فیس بک‘‘ نے ایران سے چلائے جانے والے 783 اکاؤنٹس سمیت دیگر ممالک میں بنائے گئے کئی غیر مصدقہ اور جعلی اکاؤنٹس کو معطل کرنے کا اعلان کردیا۔

فیس بک کی جانب سے جاری ایک اعلامیے کے مطابق ایران سے متعلق 783 پیجز، اکاؤنٹس اور گروپس کو اس لیے معطل کردیا گیا ہے کیونکہ وہ ‘جعلی انداز میں’ چلائے جارہے تھے۔

دنیا کے سب سے بڑے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کا کہنا تھا کہ اس طرح کے غیرمصدقہ اکاؤنٹس کو سیاست اور انتخابات میں مداخلت کے لیے چلایا جاتا ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ فیس بک نے حالیہ چند ماہ کے دوران میانمار، بنگلہ دیش اور روس میں چلائے جانے والے اس طرح کے کئی گروپس کو معطل کردیا تھا۔

فیس بک نے معطل کیے گئے تازہ اکاؤنٹس کے حوالے سے کہا کہ مختلف ممالک میں روایتی انداز میں خود کو مقامی ظاہر کرنے والے اکثر جعلی اکاؤنٹس استعمال کرتے ہیں اور تازہ واقعات کی خبریں بھی دیتے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ان خبروں میں ایران کے سرکاری میڈیا سے جنگ زدہ ممالک شام اور یمن سے متعلق جاری ہونے والی خبریں بھی شامل ہیں۔

دوسری جانب ٹویٹر نے بھی اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ ایران، وینزویلا اور روس میں محدود پیمانے میں اس طرح کی سرگرمیاں پکڑی ہیں تاہم اس حوالے سے مزید تفصیلات نہیں دی گئیں۔

ان اکاؤنٹس کے حوالے سے ٹویٹر کے بیان میں کہا گیا تھا کہ انہوں نے امریکا میں 2018 کے وسط مدتی انتخابات سے قبل اس طرح کے مشکوک اکاؤنٹس کو معطل کردیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق فیس بک اور سوشل میڈیا کا ایک اور پلیٹ فارم انسٹاگرام میں افغانستان، جرمنی، بھارت اور امریکا سمیت درجنوں ممالک میں اپنی شناخت چھپا کر دوسرے ناموں سے اکاؤنٹس چلائے جاتے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سروس میں مشکوک سرگرمیوں کی نشان دہی اور معلومات کی فراہمی میں ٹویٹر نے تعاون کیا اور اسی طرح ٹکنالوجی کی دیگر کمپنیاں بھی تعاون کررہی ہیں جس سے صارفین کے لیے پیدا ہونے والے خطرات سمیت کئی مشکوک سرگرمیوں کو روکا جاسکتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں