.

خادم الحرمین الشریفین کی قومی ’’اونٹ میلے‘‘ کی اختتامی تقریب میں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ہونے والے تیسرے شاہ عبدالعزیز قومی اونٹ میلے کی اختتامی تقریب میں خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز سمیت مملکت کی اعلیٰ شخصیات نے شرکت کی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق تیسرا سالانہ شاہ عبدالعزیز اونٹ میلہ جنوبی گورنری الدھناء کے علاقے الصیاھد میں منعقد کیا گیا۔ میلے میں آمد پر سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے شاہ سلمان کا استقبال کیا۔ اس موقع پر الریاض کے گورنر شہزادہ محمد بن عبدالرحمان بن عبدالعزیز، وزیر داخلہ شہزادہ عبدالعزیز بن سعود بن نایف بن عبدالعزیز اور اونٹ کلب کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹرز فہد بن فلاح حثلین بھی موجود تھے۔

اس کے علاوہ اونٹ میلے کی آخری تقریب میں کویت کے ولی عہد الشیخ نواف الاحمد الجابر المبارک الصباح، کرغیزستان کے وزیر اعظم ایلگازیف محمد، دبئی کے ولی عہد الشیخ حمدان بن محمد بن جاثم آل مکتوم، شاہ بحرین کے خصوصی مندوب الشیخ ناصر بن حمد آل خلیفہ، الشیخ سلطان بن سحیم آل ثانی، سلطنت آف اومان کے الشیخ سعد محمد السعدی، موریتانیہ کے ترجمان سید محمد ولد محم، ریاض کے گورنر شہزدہ فیصل بن بندر بن عبدالعزیز، وزیر مملکت شہزادہ ترکی بن محمد بن فہد بن عبدالعزیز، ریاض کے ڈپٹی گورنر شہزادہ محمد بن عبدالرحمان بن عبدالعزیز، وزیر داخلہ شہزادہ عبدالعزیز بن سعودی بن نایف بن عبدالعزیز اور دیگر رہ نمائوں اور اعلیٰ عہدیداروں نے شرکت کی۔

شاہ سلمان کی بن عبدالعزیز کی میلے میں آمد کے بعد اونٹ کلب کے چیئرمین بورڈ آف ڈائریکٹرز فہد بن فلاح بن حثلین نے شاہ سلمان اور دیگر معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ اونٹ میلہ سعودی فرمانروا اور مملکت کی قیادت کی حکمت اور دانش مندی کا عکاس ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اونٹ میلہ سعودی عرب کی قومی ثقافت کی علامت بن چکا ہے اور اس میلے کے انعقاد سے ہم اپنی تاریخی عرب ثقافت کو اجاگر کرکے نئی نسل کو اپنی تاریخ اور ثقافت سے مربوط کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ اونٹ کی تخلیق اللہ کی تخلیق کردہ مخلوقات میں ایک عجیب مخلوق ہے جس کے بارے میں خود باری تعالیٰ نے استفسار کے انداز میں فرمایا "افلا ینظرون الیٰ الابل کیف خلقت"۔ یعنی کیا وہ دیکھتے نہیں کہ اونٹ کو کیسے پیدا کیا گیا؟۔ اونٹ اللہ کی عظیم نعمتوں میں سے ایک بے پایاں نعمت ہے۔

اس کے بعد اونٹ میلے میں اونٹوں کی دوڑ کے آخری دو مقابلے منعقد کیے گئے۔ مقابلے کے بعد شاہ سلمان نے کامیاب ہونے والے اونٹوں کے مالکان کو ایوارڈ، ٹرافیاں اور انعامات تقسیم کیے۔

پہلی سو پوزیشنز حاصل کرنے والے اونٹوں کے مالکان میں عمیر بنفہد بن شنار القحطانی، اھلال بن عائض بن دغیثر العتیبی، حمد بن عوضہ بن علی المری اور مطلق بن عبداللہ الفطیمانی السھلی، 50 کے گروپ میں آنے والوں میں شہزادہ عبدالرحمان بن خالد بن مساعد، موسیٰ بن عبدالعزیز بن عبداللہ الموسیٰ، عائض بن رفعان بن عایض القحطانی، مترک بن نایف بن ترکی بن حجنہ، طلق ظافی آل روق القحطانی اور محمد بن فہاد بن جخذب السعدی القحطانی، جب کہ 30 کے گروپ میں ترکی بن سعد بن سوید الحقبانی، عبداللہ بن ناصر بن عبداللہ الجبری، سیف محسن بخیت حفیظ المزروعی، فالح بن محمد فالح بن شویشان نایف بن عبدالمحسن بن صالح الراجحی اور ھادی بن عبدالللہ عبدالھادی الدوسری کامیاب قرار پائے۔