استقبال رمضان کے لئے مسجد حرام کا باب شاہ عبدالعزیز کھولنے کی ہدایت

صدر نشین جنرل پریذیڈنسی برائے امور الحرمین الشریفین ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس کا دورہ مسجد حرام، تعمیراتی کام کا جائزہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کی جنرل پریذیڈنسی برائے امور الحرمین الشریفین کے صدر نشین شیخ ڈاکٹر عبد الرحمن بن عبد العزيز السدیس نے مسجد حرام کے تاریخی دروازے شاہ عبدالعزیز کو فوری طور پر کھولنے کی ہدایت کرتے ہوئے حکم دیا کہ استقبال رمضان کی خاطر مسجد حرام میں تعمیر ومرمت کا کام متعلقہ اداروں کے تعاون سے ہنگامی بنیادوں پر مکمل کیا جائے۔

ڈاکٹر عبدالرحمن بن عبدالعزیز السدیس نے مسجد حرام کے پراجیکٹ ڈائریکٹوریٹ پر زور دیا کہ حرم میں جاری مرمت اور اصلاح کے کاموں کو کم سے کم وقت میں معیاری انداز میں مکمل کرنے کے لئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھی جائے تاکہ رمضان المبارک میں فرزندان توحید کی غیر معمولی تعداد کے باعث متعمرین اور نمازیوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

صدر نشین جنرل پریذیڈنسی برائے امور الحرمین الشریفین شیخ ڈاکٹر عبدالرحمن بن عبدالعزیز السدیس نے مسجد حرام میں جاری تعمیر ومرمت کے کاموں کی رفتار کا جائزہ لینے کے لئے مسجد کے مختلف حصوں کا دورہ کیا۔ انھوں نے مملکت کے بانی شاہ عبد العزيز سے نام سے موسوم دروازہ کی مرمت اور اصلاح کے منصوبے پر کام کرنے والے حکام اور انجنیئرز سے براہ راست سوالات بھی کئے۔

اس موقع پر انہوں نے منصوبے پر کام کرنے والے حکام کو ہدایت کی کہ وہ اللہ کے مہمانوں کے آرام اور تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے تعمیر ومرمت کے کام کو اعلیٰ معیار کے مطابق مکمل کریں۔ انہوں نے منصوبے پر کام کرنے والے عمال اور نگران انتظامیہ کو ہدایت کی وہ اعلیٰ پیشہ وارانہ معیار کو بروئے کار لاتے ہوئے تعمیر کو مملکت کی اعلی قیادت کی توقعات اور ویژن 2030 کی روشنی میں جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچائیں۔

حقائق جاننے کے سلسلے میں کئے جانے والے اس دورے میں انچارج انڈر سیکرٹری جنرل برائے المسجد الحرام احمد بن محمد منصوری اور انچارج انڈر سیکرٹری جنرل برائے انتظامی امور ڈاکٹر سعد بن محمد المحيميد بھی صدر نشین ڈاکٹرعبدالرحمن بن عبد العزيز السدیس کے ہمراہ تھے۔

یاد رہے کہ باب شاہ عبدالعزیز مسجد حرام کے اہم داخلی دروازوں میں شامل ہے اور اس کے ذریعے فرزندان توحید کی بڑی تعداد حرم کی حدود میں داخل ہوتی ہے۔ حالیہ تعمیراتی کاموں کی تکمیل پر دروازے کی اونچائی 48 میٹر تک ہو جائے گی جسے رش کے اوقات میں بھی بیت العتیق میں داخلے کے خواہش مند بآسانی استعمال کر سکیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں