وزن کم ہونے کے بعد پگھلنے والی چربی کہاں جاتی ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

موٹاپے کے شکار افراد اپنا وزن کم کرنے کے لیے طرح طرح کے طریقے اختیار کرتے ہیں جن سے ان کے جسم میں جمع ہونے والی فالتو چکنائی کم ہونے میں مدد ملتی ہے۔ مگر سوال یہ ہے کہ وزن کم ہونے کے بعد وہ چکنائی یا چربی جاتی کہاں ہے؟

بعض لوگوں کا خیال ہے کہ وزن کم ہونے کے بعد چربی توانائی میں بدل جاتی ہے مگر ایک نئی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ وزن کم ہونے کے بعد چکنائی توانائی میں تبدیل نہیں ہوتی بلکہ جسم سے خارج ہوجاتی ہے۔

سائنسی جریدے 'ڈیلی ہیلتھ' کے مطابق فزکس کے سائنسدان روبن میرمن اور بائیو کیمسٹری کے ماہر انڈرو برائون کا کہنا ہے کہ وزن کم ہونے کے بعد جسم میں موجود چکنائی دو طرح سے خارج ہوتی ہے۔ یہ چکنائی کاربن ڈئی آکسائیڈ میں تبدیل ہو کر پھیپھڑوں سے سانس کے ذریعے نکل جاتی ہے اورباقی بچ جانے والی پانی میں تبدیل ہو کر پیشاب، پسینے اور آنسوئوں کے ذریعے خارج ہوتی ہے۔

اگر کوئی شخص اپنے وزن میں 10 کلو گرام کمی کرتا ہے تو اس میں سے 8 اعشاریہ 4 کلوگرام پھپیھڑوں کے راستے چکنائی خارج ہوتی ہے جب کہ ایک اعشاریہ چھ کلو گرام پانی میں تبدیل ہو کر نکل جاتی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ جسم سے سب سے زیادہ چکنائی پھیپھڑوں کے راستے خارج ہوتی ہے۔ یہ تحقیق ثابت کرتی ہے کہ زیادہ سے زیادہ سانس لینے اور آکسیجن کی مقدار میٹابولزم کے عمل میں اضافے کا ذریعہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں