.

سبحان اللہ! کعبہ مشرفہ کے گرد فرزندان توحید کے سجدوں میں گرے سروں کا لا متناہی ہالہ

عبداللہ الصبیعی نے ایسی شاہکار تصاویر بنانے کے لئے ریمورٹ کنٹرول ڈرون کیمرہ استعمال کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کعبہ مشرفہ اور اس کے اطراف میں طواف اور نمازوں کی ادائی کی روحانی کیفیات فرزندان اسلام کے ایمان کو ایک نئی تازگی اور توانائی بخشتی ہیں۔ حرم مکی میں روزہ داروں کی نمازوں کے دوران لی گئی تصاویر نے سوشل میڈیا پر تہلکہ مچا رکھا ہے۔

یہ تصاویر عبداللہ الصبیعی نامی سعودی فوٹو گرافر نے گذشتہ برس' الحرمین الشریفین پریزیڈنسی کے دستاویزی پروگرام کے دوران لی گئی تھیں۔ سوشل میڈیا پران تصاویر کو غیرمعمولی پذیرائی ملی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے الصبیعی نے بتایا’’ کہ میں نے حرم شریف میں نماز کی ادائی کے دوران مسلمان نمازیوں کو اللہ کے سامنے اس طرح سجدہ ریز دیکھ کر میں خود بھی مبہوت رہ گیا۔ میں نے اس روحانی کیفیت کو تصاویر اور ویڈیو کی شکل میں اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کیا۔‘‘

انہوں نے مزید کہا کہ حرم مکی میں نمازوں کی ادائی کے مناظر کو کیمرے میں محفوظ کرنے کے لیے ریمورٹ کنٹرول کی مدد سے کام کرنے والے مواصلاتی ڈرون کا استعمال کیا گیا۔

سعودی فوٹو جرنلسٹ کا کہنا تھا کہ میں کعبہ شریف کے آس پاس نمازوں کی ادائی کے مناظر کو عکس بند کر کے عالم اسلام تک روحانی کیفیات پہنچانا چاہتا تھا۔ مسجد حرام میں پہلی رکعت سے لے کر سلام پھیرنے تک، طواف، امام کے پیچھے صفوں کی ترتیب اور چند سیکنڈز کےاندر اندر پوری مسجد میں نمازیوں کا صفیں درست کرنا حیران کن ہے۔

ایک سوال کے جواب میں سعودی فوٹو جرنلسٹ نے کہا کہ میں نے ان تصاویر کو ماہ صیام کی آمد تک محفوظ رکھا اور رمضان کے آغاز کے بعد انہیں سوشل میڈیا پر پوسٹ کیا تو ہرطرف ان تحسین کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع ہوگیا۔

سوشل میڈیا پر حرم شریف میں نمازوں کی تصاویر کو انڈونیشیا، افغانستان، پاکستان، امریکی مسلمانوں، یورپی ممالک میں بسنے والے مسلمانوں نے انسٹا گرام اور ٹویٹر پر غیرمعمولی طور پر سراہا۔