.

نمازی کس "باغ" میں داخلے کی خاطر ایک دوسرے پر سبقت لے جانے کی کوشش کرتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مسجد نبوی کے عین وسط میں زمین پر جنت کا ایک ٹکڑا واقع ہے جس سے متعلق خود نبی اکرم ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ ’’ما بين بيتي ومنبري روضة من رياض الجنة‘‘ یعنی میرے گھر اور مسجد نبوی کے منبر کے درمیان جگہ جنت کے باغوں میں سے ایک باغ ہے۔

یہ وہ مقدس بقعہ ارض ہے جس پر نبی مہربان ﷺ نے نمازیں ادا کیں، سجدے اور رکوع کیے۔ عوام الناس کے اجتماعات سے خطاب کیا اور وفود سے ملاقاتیں کرتے رہے۔ اس بابرکت مقام پر ماہ صیام کے آغاز سے نمازیوں اور روزہ داروں کا غیر معمولی رش دیکھنے کو ملتا ہے۔ ہر کوئی یہاں پر نماز ادا کر کے اخروی فلاح وکامرانی کا متمنی نظر آتا ہے۔

رسول اکرم ﷺ کے متذکرہ فرمان کی محدثین تین توجیحات بیان کرتے ہیں۔ اول یہ کہ ریاض الجنۃ‌ پر عبادت کے ذریعے مسلمان سعادت حاصل کرتے ہیں ان پر اللہ کی رحمتیں نازل ہوتی ہیں۔ دوسرا یہ کہ یہاں عبادت جنت میں داخلے کا ذریعہ ہے اور تیسرا قول یہ ہے کہ یہ مقام بعینہ جنت کا حصہ ہے اور روز قیامت اسے جنت میں شامل کر دیا جائے گا۔

یہ مقدس مقام حجرہ نبوی کے مغرب سے مسجد نبوی کے منبر تک پھیلا ہوا ہے۔ الروضة الشريفة کی مساحت 330 مربع میٹر ہے۔ مشرق سے مغرب کی سمت اس کا پھیلاؤ 22 میٹر اور شمال سے جنوب کی سمت 15 میٹر ہے۔ الروضة الشريفة میں مسجد نبوی کی محراب بھی شامل ہے جو الروضة کے مغربی حصے میں ہے۔

الروضة الشريفة کی جنوبی سمت تانبے کی جالی ہے، تاہم جنوبی اور مغربی اطراف مسجد کے دوسرے حصوں سے متصل ہیں۔ سفید سنگ مرمر کے دو میٹر بلند ستون، جن پر سونے کے پانی سے معلع کاری کی گئی ہے، الروضة الشريفة کو مسجد نبوی کے باقی حصوں سے ممتاز بناتے ہیں۔

الروضة الشريفة کی مشرقی سمت میں ام المومنین حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کا حجرہ، مغرب میں مسجد کا منبر شریف، جنوب میں مسجد کی دیوار جس میں محراب النبی صلی اللہ علیہ وسلم واقع ہے۔ شمال سے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے حجرہ کے اختتام تک مشرق کی سمت جاتی ہوئی لکیر مغرب کی جانب منبر تک چلی جاتی ہے۔

الروضة الشريفة کے اردگرد متعدد اہم مقامات واقع ہیں، ان میں نمایاں ترین حضرت عائشہ رضی اللہ تعالیٰ عنھا کا حجرہ، جس میں نبی آخر الزمانﷺ کی آخری آرام گاہ ہے۔ یہ علاقہ مسجد نبوی کے تمام ستونوں سے الگ ہے۔ قبلے کی سمت الروضة الشريفة پر خوبصورت تانبے کا باڈر لگایا گیا ہے جو اسے مسجد اور الروضۃ کو ایک میٹر کی بلندی پر ایک دوسرے سے الگ کرتے ہیں۔ اس جگہ دو راستے ایسے بنائے گئے ہیں کہ ان کے اوپر محراب نبی ﷺ ایستادہ ہے۔