.

کیا لمبے لمبےجوتوں سے سماجی فاصلے بڑھائے جا سکتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وائرس کی عالمی وبا کی روک تھام کے حوالے سے پوری دنیا میں نت نئے طریقے سامنے آ رہے ہیں۔ لوگوں میں سماجی فاصلے بڑھانے اور وائرس کا پھیلائو روکنے کے لیے ڈاکٹر اور سائنسدان اپنے اپنے میدانوں میں کام کر رہے ہیں۔

ایک رومن جوتا ساز نے سماجی فاصلے بڑھانے کے لیے لمبے جوتے تیار کرنے کا تصور پیش کیا ہے۔ رومن موچی گریگوری لوپ بے سماجی فاصلوں کے لیے 75 سیںٹی میٹر کا جوتا تیار کیا ہے۔

دارالحکومت بخارسٹ سے 500 کلو میٹر دور کلوچ نابوکا قصبے میں قائم اپنی جوتا فیکٹری میں اس نے ایک منفرد اور لمبا جوتا تیار کیا ہے۔

یہ قابل ذکر ہے کہ جوتا ہاتھ سے چمڑے کی بہترین اقسام کا استعمال کرتے ہوئے بنایا گیا ہے۔ جوتے کی لمبائی 75 سنٹی میٹر ہے۔

مقامی میڈیا کی توجہ کے بعد اسے پوری دنیا سے درخواستیں ملنا شروع ہوگئیں۔

خیال رہے کہ پوری دنیا میں کرونا کے وائرس سےمتاثرہ افراد اور ہلاکتوں کی تعداد میں تیزی کےساتھ اضافہ جاری ہے۔ اے ایف پی کی گذشتہ چوبیس گھنٹے کے رپورٹ کے مطابق دنیا بھر میں کرونا کے متاثرین کی تعداد70 لاکھ سے تجاوز کرگئی ہے جب کہ چار لاکھ دو ہزار 867 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ امریکا اور براعظم یورپ کرونا سے سب سے زیادہ متاثر ہونےوالے خطے ہیں۔