.

ایران سے یمن کو بھیجے گئے اسلحہ کے ساتھ فارسی زبان میں مواد:دستاویزی ثبوت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے 17 اپریل کو ایرانی اسلحے سے لدی ہوئی ایک کشتی پکڑی تھی۔اس اسلحہ اور گولہ بارود کے ساتھ فارسی زبان میں لکھا ہوا مواد بھی پکڑا گیا تھا۔عرب اتحاد کے ایک اعلیٰ افسر نے العربیہ کو پہلی مرتبہ خصوصی طور پر اس اسلحے اور مواد کی تصاویر فراہم کی ہیں۔

عرب اتحاد کے ذریعے کے مطابق لکڑی سے بنائی گئی یہ کشتی یمن کے ساحلی علاقے موشا میں پکڑی گئی تھی۔ ایران یمن میں حوثی ملیشیا کو اسلحہ مہیا کرنے کے لیے لکڑی سے بنی چھوٹی کشتیاں استعمال کرتا رہا ہے کیونکہ راڈارز ان کے سراغ نہیں لگا سکتا ہے۔

ایران اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے حوثی ملیشیا اور خطے میں اپنی گماشتہ دوسری ملیشیاؤں کو اسلحہ مہیا کررہا ہے۔اس سے پہلے نومبر 2019ء اور فروری 2020 میں بھی ایران نے اسلحے کی دو کھیپیں حوثی ملیشیا کے لیے کشتیوں کے ذریعے یمن روانہ کی تھیں لیکن یہ دونوں کشتیاں پکڑی گئی تھیں۔

ایران کے بارے میں یہ نئے ثبوت پہلے سے موجود شواہد میں اضافہ ہے۔ایران یمن کو پہلے ہی اقوام متحدہ کی قرارداد 2216 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اسلحہ بھیج رہا تھا۔اس قرارداد کے تحت حوثیوں کو اسلحہ مہیا کرنے پر پابندی عاید کی ہے۔

ایران کے بارے میں اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیریس کی نئی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں گذشتہ سال مئی میں عفیف میں واقع تیل کی تنصیبات ، جون اور اگست میں ابھا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے اور ستمبر میں بقیق اور ہجرہ خریص میں واقع سعودی آرامکو کی تنصیبات پر حملوں میں ایرانی اسلحہ استعمال کیا گیا تھا۔

اس رپورٹ میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 پر عمل درآمد کا جائزہ لیا گیا ہے۔اس قرارداد کے ذریعےاقوام متحدہ نے ایران سے جولائی 2015ء میں چھے عالمی طاقتوں کے ساتھ طے شدہ جوہری سمجھوتے المعروف بہ مشترکہ جامع لائحہ عمل ( جے سی پی او اے) کی توثیق کی تھی۔

اس رپورٹ میں بھی اس امر کی توثیق کی گئی ہے کہ ایران سے یمن کے لیے بھیجی گئی اسلحہ کی دو کھیپیں پکڑی گئی تھیں۔ یہ اسلحہ سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 کی خلاف ورزی کرتے ہوئے منتقل کیا جارہا تھا۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد نے یمن میں مداخلت کے آغاز کے بعد سے دوسرے دوست ممالک کے ساتھ حوثی ملیشیا کو ایران سے بھیجے گئے اسلحے کی کئی کھیپیں پکڑی ہیں۔درحقیقت ایران جس طرح عراق ، شام اور لبنان میں دہشت گرد ملیشیاؤں کو اسلحہ منتقل کررہا ہے،اس طرح اس نے یمن میں حوثی ملیشیا کو منتقل کیا ہے،اس تمام عمل میں ایک طرح کی گہری مماثلت پائی جاتی ہے۔

ایران سے یمن کو بھیجی گئی کشتی سے پکڑے گئے اسلحہ اور اس کے ساتھ مواد کی تصاویر حسب ذیل ہیں: