.

سعودی آرٹسٹ کی تیار کردہ دنیا کی سب سے بڑی پینٹنگ گینز بک میں شامل

عہود عبداللہ کا امارات کو دُنیا کی سب سے بڑی پینٹنگ کا تحفہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی ایک فائن آرٹ آرٹسٹ عہود عبداللہ کی سعودی عرب اور امارات کے رہ نمائوں کی تصاویر پر مشتمل دنیا کی سب سے بڑی پینٹنگ تیار کر کے اسے گینز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں شامل کرانے میں کامیابی حاصل کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یہ پینٹنگ جدہ شہر کے النورس اسکوائر میں تیار کی گئی ہے جو نہ صرف سعودی عرب بلکہ اب تک کی دنیا کی سب سے بڑی پینٹنگ ہے۔

عہود عبداللہ نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میں نے یہ پینٹنگ خادم الحرمین الشریفین کے مشیر شہزادہ خالد الفیصل کے اس مشہور قول کو سامنے رکھتے ہوئے تیار کی ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ 'سعودی اماراتی اور اماراتی سعودی ہیں'۔ ان کے یہ الفاظ دونوں برادر قوموں کے درمیان قرابت اور مملکت اور امارات کے درمیان تاریخی ہمہ جہت شاندار تعلقات کی عکاسی کرتے ہیں۔

سعودی آرٹیسٹ کا کہنا تھا کہ اس نے یہ پینٹنگ امارات کے 49 ویں قومی دن کے موقع پر اماراتی قیادت کے ایک تحفے کے طور پر پیش کی ہے۔

پینٹنگ کی تیاری میں مسلسل 45 دن لگے اور وہ دن کا زیادہ وقت اس کی تیاری پر صرف کرتی رہی ہے۔

پینٹنگ کے حجم اور سائز کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں عہود نے کہا کہ یہ پینٹنگ 221 مربع میٹر ہے جسے کافی کی مدد سے تیار کیا گیا ہے اور 60 میٹر کی جگہ پر کافی استعمال کی گئی ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ یہ پینٹنگ آرٹ کے شعبے میں کام کرنے والے فن کاروں اور ماہرین کے لیے ایک چیلنج ہے۔

'ایک لڑی' کے عنوان سے تیار کردہ اس پینٹنگ میں سعودی عرب کے بانی شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمان آل سعود اور امارات کے الشیخ زاید بن سلطان آل نھیان کو دکھایا گیا ہے۔