.

ایلن مسک دنیا کی امیرترین شخصیت بن گئے،بیزوس دوسرے نمبر پر!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کارسازفرم ٹیسلا کے سربراہ ارب پتی کاروباری ایلن مسک دنیا کے امیرترین شخص بن گئے ہیں اور انھوں نے امازون کے مالک جیف بیزوس کوامارت میں پیچھے چھوڑ دیا ہے۔

بلومبرگ نیوز کی رپورٹ کے مطابق جمعرات کے روز ٹیسلا کے حصص میں نمایاں اضافہ ہوا ہے اور49 سالہ مسک کی نقد دولت کی مالیت 188 ارب 50 کروڑ ڈالر سے زیادہ ہے۔اس طرح ان کی دولت بیزوس سے ڈیڑھ ارب ڈالر بڑھ گئی ہے۔

ایلن مسک کی ذاتی دولت گذشتہ سال ٹیسلا کے حصص میں آٹھ گنا اضافے کی بدولت بڑھ گئی تھی۔اس وقت ٹیسلا دنیا کی سب سے زیادہ منافع کمانے والی کارساز فرم بن چکی ہے۔وہ ماحول دوست برقی کاریں تیار کرتی ہے۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق مسک کارساز فرم کے 20 فی صد حصص کے خود مالک ہیں۔جمعرات کو ٹیسلا کے حصص کی قیمت میں 7۰4 فی صد اضافہ ہوا ہے اور ایک شیئر کی قیمت 811۰61 ڈالر ریکارڈ کی گئی ہے۔

تاہم فوربس کی ارب پتی افراد کی فہرست کے مطابق ایلن مسک ابھی امازون کے مالک بیزوس سے پیچھے ہیں اور ان سے 7 ارب 80 کروڑ ڈالر کم دولت کے مالک ہیں۔

مسٹرمسک انٹرنیٹ کے ذریعے رقوم کے منتقلی کا کاروبار کرنے والی بڑی کمپنی پے پال ہولڈنگز کے شریک بانی تھے لیکن بعد میں انھوں نے یہ کمپنی فروخت کردی تھی۔اس وقت وہ دنیا کی بعض بڑی مستقبل ساز کمپنیوں کے مالک ہیں۔

وہ ٹیسلا کے علاوہ راکٹ ساز کمپنی اسپیس ایکس اور نیورالنک کے بھی سربراہ ہیں۔نیورا لنک ہائی بینڈوتھ دماغی مشینی انٹرفیس بنا رہی ہے جن کے ذریعے انسانی دماغ کو کمپیوٹرز سے منسلک کیا جاسکتا ہے۔

مسٹر مسک نے امریکا کے شہروں میں مصروف شاہراہوں کے زیرزمین ارزاں لاگت پرسرنگیں (ٹنل) بنانے کے لیے ’بورنگ کمپنی‘ قائم کی تھی۔اس منصوبہ کا مقصد شہروں میں ٹریفک جام سے بچنے کے لیے پبلک ٹرانسپورٹیشن کے تمام نظام کو برقی بنانا ہے۔