سعودی عرب میں کووڈ۔۱۹ کرفیو کا دوبارہ اجراء زیر غور ہے: وزارت داخلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی وزارت داخلہ کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل طلال الشلھوب نے کہا ہے کہ مملکت میں متعلقہ اتھارٹی کے ذریعے سخت اقدامات نافذ کیے جا سکتے ہیں جب تک عوام کرونا ایس او پیز کی پابندی کرتے رہیں گے تب تک کرفیو نہیں لگایا جائے گا۔ یہ فیصلہ عوام کے ہاتھ میں ہے۔

پریس بریفنگ کے دوران وزارت داخلہ کے ترجمان نے کہا کہ کووڈ 19 سے بچاؤ کے لیے مقرر حفاظتی تدابیر کی پابندی کی صورت میں کرفیو کا فیصلہ نہیں کیا جائے گا۔ طلال الشلھوب نے کہا کہ متعلقہ ادارے مملکت بھر میں کرونا کی بدلتی ہوئی صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور اس حوالے سے انتہائی چوکس ہیں۔

ترجمان وزار ت داخلہ کا کہنا ہے کہ حفاظتی تدابیر کی خلاف ورزیوں کا تناسب 72 فیصد تک ہو چکا ہے اور یہ خطرے کی علامت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سیکیورٹی فورس کے اہلکار کرونا ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والوں پر کڑی نظر رکھے ہوئے ہیں۔

ادھر وزارت صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمد العبد العالی نے اتوار کو کرونا وائرس کی تازہ صورتحال سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا تھا کہ ’ان دنوں سعودی عرب میں کرونا وائرس سے متاثرین کی تعداد بڑھ رہی ہے اوراس میں 286 فیصد اضافہ ہوا ہے‘۔وزارت صحت کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ’کرونا وبا کے خاتمے کے لیے حفاظتی تدابیر کی پابندی ناگزیر ہے۔

سعودی عرب میں کرونا کے نئے کیسز گزشتہ چند دنوں سے مسلسل 300 سے زیادہ سامنے آ رہے ہیں۔ ہفتے کے روز گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا کے 317 نئے مریض سامنے آئے جبکہ 278 افراد وائرس سے صحت یاب بھی ہوئے ہیں۔‘

مقبول خبریں اہم خبریں