بسم اللہ والی شرٹ پہننے پر کے پاپ ریپر’آئی ایم آف مونسٹا ایکس‘ کڑی تنقید کی زد میں!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کے پاپ ریپر آئی ایم فرام مونسٹا ایکس کو بسم اللہ والی شرٹ پہننے پرسوشل میڈیا پر کڑی تنقید کا سامنا ہے اور ان کے مسلم مداح بالخصوص ان پر کڑی نکتہ چینی کر رہے ہیں۔

25 سالہ آئی ایم کا حقیقی نام آئیم شانگ کیون ہے۔انھوں نے بسم اللہ کی عبارت والی شرٹ پہن کر دوسروں کو خود ہی تنقید کی دعوت دی ہے۔انھوں نے اس شرٹ کو اپنے پہلے منی البم کے اجرا کےموقع پر پہنا تھا۔

انھوں نے جو شرٹ پہنی ہوئی تھی،اس میں بسم اللہ کوبائیں کونے میں ایک تصویرمیں دیکھا جاسکتاہے۔آئی ایم کی اس مذموم حرکت پر ان کے مداحوں نے ٹویٹرپر اپنے سخت غم وغصے کا اظہار کیا ہے۔

تاہم یہ پتا نہیں چل سکا کہ جس شرٹ پر بسم اللہ لکھی ہوئی تھی، یہ کس برانڈ کی تیار کردہ تھی۔اس پر بعض لوگوں نے اس رائے کا اظہار کیا ہے کہ یہ شرٹ ممکنہ طور پر مونسٹا ایکس کے لیے خصوصی طور پر سلی ہوسکتی ہے۔

بعض مداحوں نے آئی ایم کا دفاع بھی کیا ہے اور انھوں نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ وہ شاید بسم اللہ کی مذہبی اہمیت اور حساسیت سے آگاہ نہیں تھے۔ اگر وہ جانتے ہوتے تو وہ اس شرٹ کو پہننے سے انکار کردیتے۔

لیکن سوشل میڈیا کے دوسرے صارفین نے اس دلیل کو مسترد کردیا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ ’’جہالت کومذہب کی توہین کے معاملے میں معذرت کے طور پر پیش نہیں کیا جاسکتا۔ مونسٹا ایکس کے معاملے میں تو بالکل بھی نہیں کیونکہ ان کے مداح تو مختلف عقیدوں کے پیروکارہیں اورانھیں ان میں سے کسی کے بھی مذہبی جذبات کو مجروح نہیں کرنا چاہیے۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں