.

مسجد حرام میں متعدی امراض کی روک تھام کے لیے ہوا کو صاف رکھنے کا جدید ترین نظام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وائرس (کووڈ ۔19) جیسی وبائی مرض کے تناظر میں مملکت سعودی عرب نے رواں سال رمضان کے سیزن کے دوران حرمین شریفین میں تمام احتیاطی تدابیر کو عملی جامہ پہنانے کی حکمت عملی تیار کر رکھی ہے تاکہ معتمرین کرام، نمازیوں، زائرین اور عملے کی صحت اور حفاظت کو یقینی بنایا جا سکے۔

مساجد میں ماحول کو مناسب انداز میں گرم رکھنے اور ہوادار رکھنے، ٹھنڈک کے لیے ایئر کنڈیشنگ احتیاطی تدابیر کے نظام کا ایک حصہ ہیں۔ مساجد میں درجہ حرارت کو آرام دہ سطح پر برقرار رکھنا اور حرمین کے اندر ہوا کی صفائی کو یقینی بنایا جاتا ہے تاکہ کسی بھی انفیکشن کے پھیلاؤ کا مقابلہ کرنے اور اس پر قابو پانے کو یقینی بنایا جا سکے۔

دو مقدس مساجد میں قائم "یورک"کا نظام دو حصوں میں منقسم ہے۔ ایئر کنڈیشن اسٹیشن میں نصب ایئر کنڈیشنر اور سعودی ساختہ ہوا کو صاف کرنے والے یونٹ دونوں مقدس مساجد میں لگائے گئے ہیں۔ مکہ مکرمہ میں مسجد حرام کے لیے الشامیہ اور الاجیاد جبکہ مدینہ منورہ میں مرکزی کولنگ اسٹیشن دنیا بھر کے سب سے بڑے کولنگ اسٹیشن ہیں جو دونوں مقدس مقامات کے اندرونی مقامات کی ہوا کو صاف رکھنے ماحول کو مناسب ٹھنڈک فراہم کرتے ہیں۔

جاری وبائی امراض کی روشنی میں ہوا کو صاف رکھنے والے یونٹ اور فلٹرنگ یونٹ جدید ٹکنالوجی کی صلاحیت کے ذریعہ اندرونی ہوا کی کوالٹی اور صفائی کو یقینی بناتے ہیں جو بیماریوں اور ہوا سے پھلنے والے وائرس پر قابو پانے میں مدد دیتے ہیں۔ یہ سسٹم مساجد میں گرد وغبار کے ذرات کو ایئر ویز سے گزرنے سے روکتا ہے. ہوا کنٹرول کرنے والے یونٹ زائرین اور نمازیوں کے آرام کو یقینی بناتے ہیں اور درجہ حرارت، نمی کے تناسب اور ہوا کے دباؤ کو کنٹرول کرتے ہوئے دونوں مساجد کے بنیادی ڈھانچے کو یکساں تحفظ فراہم کرتے ہیں۔

کولنگ سسٹم پانی کو ٹھنڈا کرتے ہیں اور اسے ہوا سے چلنے والی یونٹوں میں پمپ کرتے ہیں تاکہ ہوا ان پانیوں کے ساتھ مس ہو۔ جب ٹھنڈی ہوا پوری مسجد میں چلتی ہےتو ہوا کا درجہ حرارت جذب کرنے والا پانی اسٹیشن پر واپس آتا ہے اور کولنگ پوائنٹ کے اندر دوبارہ ٹھنڈا ہوتا ہے اور واپس مسجد کی طرف پمپ ہوتا ہے۔