.

سعودی عرب میں گاہکوں کو شیشہ فروخت کرنے کی مشروط اجازت مل گئی

محکمہ صحت نے سہولت سے فائدہ اٹھانے والوں کے لیے شرائط کا اعلان کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی محکمہ صحت عامہ نے کہا ہے کہ’ قہوہ خانو ں میں صرف ویکسین لگوانے شہری اور مقیم غیر ملکیوں کو شیشہ سروس کی اجازت ہوگی‘۔

محکمہ صحت عامہ کے ذمہ دار کا کہنا ہے کہ ’پیر سترہ مئی سے قہوہ خانوں میں شیشہ اور حقہ پیش کرنے کی اجازت دی گئی ہے لیکن شیشہ اور حقہ صرف ویکسین لگوانے والوں کو ہی پیش کیا جا سکے گا‘۔

محکمہ صحت عامہ نے واضح کیا کہ’ قہوہ خانے میں صرف وہی گاہک آ سکیں گے جو ویکسین لے چکے ہو ں گے۔ شیشہ بند مقامات پر پیش کیا جا سکے گا اور ڈائننگ ہال میں فراہم کرنے کی اجازت ہو گی‘۔

محکمے کا کہنا ہے کہ’ شیشہ صرف کھلے مقامات پر پیش کیا جا سکے گا جبکہ قہوہ خانوں میں ٹیبل سسٹم بھی تبدیل کرنا ہو گا۔ ایک ٹیبل سے دوسری میز کے درمیان ضروری فاصلہ کم از کم تین میٹر کا ہونا چاہیے‘۔

سعودی عرب کے ویکسی نیشن سینٹرز
سعودی عرب کے ویکسی نیشن سینٹرز

یاد رہے کہ سعودی حکام قہوہ خانوں کے ملازمین کے لیے پہلے ہی ویکسین لازمی قرار دے چکے ہیں ۔

محکمہ صحت عامہ کا کہنا ہے کہ’ اگر قہوہ خانو ں کے مالکان ویکسین نہ لگوانے والوں کو ملازم رکھنا چاہیں تو انہیں ایک اور شرط کی پابندی کرنا ہوگی۔ وہ یہ کہ کارکنان پی سی آر ٹیسٹ رپورٹ پیش کریں اور یہ زیادہ سے زیادہ سات دن کے لیے مؤثر ہو گی‘۔