.

عرب دنیا کے آسمان پر عطارد اور مریخ کی منفرد نقل وحرکت

نادر فلکی سرگرمی دوبارہ 2032 میں دیکھی جا سکے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب ممالک کے آسمان پر عطارد اور مریخ سیارے آج بروز بدھ کو ایک دوسرے کے انتہائی قریب ترین مدار سے ہوکر گزریں گے۔ دونوں کے درمیان مغربی افق پر 0.1 ڈگری سے بھی کم کا فاصلہ ہوگا۔

جدہ میں فلکیاتی انجمن کے سربراہ انجینیئر ماجد ابو زاہرہ نے کہا ہے کہ سورج غروب ہونے کے فوری بعد چمکدار زہرہ سیارہ نظر آئے گا پھر کچھ دیر بعد عطارد اور مریخ سیارے زہرہ سیارے کے نیچے کی جانب نظر آئیں گے۔

یہ دونوں افق سے قریب ہوں گے۔ عطارد دیکھنے والوں کے دائیں جانب اور مریخ اس کے برابر میں نظر آئے گا۔

ابو زاہرہ نے بتایا کہ عطارد اور مریخ سیاروں کے ایک دوسرے کے قریب موجودگی کا منظر کرہ ارض کے نصف جنوب کے باشندوں کے لیے زیادہ آسان ہوگا۔

یہ منظر کرہ ارض کے شمالی علاقوں کے باشندے بھی دیکھیں گے لیکن نصف جنوب والے آسانی سے دیکھ سکیں گے۔

فلکیاتی انجمن کے سربراہ کا کہنا ہے کہ شمال وسطی عرض البلد والے باشندوں کو عطارد اور مریخ کی قربت کا منظر دیکھنے کے لیے دوربین استعمال کرنا پڑے گی۔ عطارد زیادہ روشن نظر آئے گا۔ یہ مریخ سے 8 گنا زیادہ چمک دار ہوگا۔