.

اداس پینٹنگز بنانے والے سعودی آرٹسٹ کی کہانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے ایک تخلیق کار نے دکھی اور اداس اشکال اور خاکوں پر مشتمل پینٹنگز تیار کر کے اس میدان میں اپنی ایک نمایاں اور منفرد پہچان بنائی ہے۔

سعودی عرب میں آرٹ ایجوکیشن کےشعبے سے وابستہ آرٹسٹ تُرکی الدعجانی اپنی اداس پینٹنگز کی گہرائیوں میں غوطہ زن ہے۔ ان پینٹنگز میں وہ اپنی والدہ کی موت کے بعد ان کی گمشدگی کا اظہار کرتا ہے۔

آرٹسٹ ترکی الدجعانی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ اس کا احساس اسے کسی بھی خاص موضوع یا مخصوص صورت حال کی عکاسی کی طرف لے جاتا ہے۔ ایسی پینٹنگز جن میں اداسی ، غصے یا تکلیف کا اظہار کرنے کی ضرورت ہوتی ہے اس کے فن کا موضوع ہرتے ہیں۔ بعض اوقات وہ خوشی کے لمحات کو بھی اپنے تخلیقی فن پاروں کی شکل میں ڈھالتا ہے۔ یہ اس کا فارغ وقت گذارنے کا ایک مصرف بھی ہے۔

رسم - تركي الدعجاني 10
رسم - تركي الدعجاني  8

انہوں نے مزید کہا کہ ڈرائنگ اور میں ایک نامکمل محبت کی کہانی ہیں۔ میں نے بچپن ہی سے ڈرائنگ شروع کر دی تھی۔ یہ اس وقت کی بات ہے جب ہم اسکول میں لیڈ پنسل کے ساتھ لکھتے ہیں۔ جب میں نےپنسل پکڑنا اور کنٹرول کرنا سیکھا۔ میں کاغذ پر نقوش بناتا اور ہر وہ چیز کھینچتا ہوں جو میں جانتا یا دیکھتا میرے ارد گرد میں رسمی خوبصورتی کو خاکوں کے ذریعے بیان کرنے میں اپنے دوستوں کی نسبت ممتاز اور با صلاحیت تھا۔

اس نے بتایا کہ ڈرائنگ کی محبت نے اسے اپنے استاد بننے کی بڑی خواہش پیدا کی۔اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ اس نے آرٹ سکھانے کے علاوہ کسی پیشے کے بارے میں کبھی نہیں سوچا تھا۔

رسم - تركي الدعجاني  2

جس سکول سے دعجانی نے اپنے خیالات کو ترویج دی اس کے بارے میں اس کا کہنا تھا کہ میں اپنے آپ کو زیادہ حقیقت پسندانہ اور تاثر دینے والے اسکول میں پاتا ہوں ۔ میری کچھ پینٹنگز درست حقیقت پسندی اور تفصیلی خصوصیات کی حامل ہوتی ہیں۔

اس نے مزید کہا کہ میری کچھ پینٹنگز ایسی ہیں جن میں ایک کہانی ہے جو دیکھنے والے کودیکھتے رہنے پرمجبور کرتی ہے۔ اداسی کا پہلو کچھ موضوعات پر حاوی ہوسکتا ہے لیکن پینٹنگ میں ایک روشن پہلو ہونا چاہیے ، جیسا کہ امید ہے۔ امید کے اظہار کے لیے روشن چراغ، افقی منظر یا ہاتھوں کا اٹھانا۔

رسم - تركي الدعجاني

اس نے مزید کہا کہ میں نے بہت سے موضوعات پر کام کیا۔ قومی اور ورثہ کے موضوعات سےاپنا کام شروع کیا۔ گھوڑے کی ڈرائنگ ، جو خوبصورت چیزوں کی علامت ہے جیسا کہ طاقت ، ہمت ، اصیل ہونا ، فخر اورجیسی خصوصیات ہیں۔

الدعجانی نے اس بات پر زور دیا کہ وہ اس کا پیغام وسیع پیمانے پرآرٹ کو پھیلانا ، آرٹ کی صلاحیتوں کو سپورٹ کرنا۔ شوقیہ افراد اور ان کی فنکارانہ صلاحیتوں کو فروغ دینا اور آرٹ کے شوقین افراد کو ڈرائنگ کی تربیت اور تعلیم شامل ہے۔