.

بائیڈن کا’میوٹ بٹن‘؛امریکی سینیٹرکے سازشی نظریے پرانٹونی بلینکن کیوں ہنس دیے؟ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی حزب اختلاف کی جماعت ری پبلکن پارٹی سے تعلق رکھنے والے ایک سینیٹر نے کانگریس کی خارجہ تعلقات کمیٹی میں دلچسپ گفتگو کی ہے۔ان کا کہنا ہے کہ وائٹ ہاؤس میں کسی کے پاس ایک ’خاموش بٹن‘ہے جو صدر جو بائیڈن کوجملے کے درمیان میں ٹوک دیتا ہے اور انھیں بولنے سے روکنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔اس پر امریکی وزیرخارجہ انٹونی بلینکن نے ایسے کسی میوٹ بٹن کی موجودگی کی تو تردیدکی ہے اور وہ سینیٹر کے اس ’’سازشی نظریے‘‘ پرہنستے رہ گئے ہیں۔

ری پبلکن سینیٹرجیمزرش نے انٹونی بلینکن سے کمیٹی میں افغانستان کے بارے میں ایک سماعت کے دوران میں متعدد باریہ سوال کیا کہ کیا کوئی میوٹ بٹن ہے؟میڈیا نے اس کو’بائیڈن میوٹ بٹن‘کا نام دیا ہے۔

رش نے وزیرخارجہ سے بڑی سنجیدگی سے پوچھا:’’وائٹ ہاؤس میں کسی کو بٹن دبانے اور صدر کو روکنے،ان کی بولنے کی صلاحیت سلب کرنے اورآوازکاٹنے کا اختیار حاصل ہے۔ یہ شخص کون ہے؟‘‘

انھوں نے انٹونی بلیکن کے انکارپر ایک مرتبہ پھر اپنا یہ جملہ دُہرایا:’’کسی میں بٹن دبانے ،صدر کی آواز کاٹنے اور انھیں بولنے سے روکنے کی صلاحیت ضرورہے۔ وہ شخص کون ہے؟‘‘

’’ایسا کوئی شخص نہیں ہے‘‘۔ بلینکن نے جواب دیا۔

’’کیا آپ مجھے بتا رہے ہیں، اس کمیٹی میں یہ کہہ رہے ہیں کہ ایسا نہیں ہوتا؟وائٹ ہاؤس میں کوئی بھی ایسا شخص نہیں ہے جو بٹن دباتا ہے اور صدر کی درمیان جملے میں قطع کلامی کردیتا ہے؟‘‘رش نے دوبارہ پوچھا۔

اس پر بلینکن نے ہنستے ہوئے کہا:’’یہ درست ہے‘‘۔

مگر سینیٹررش اس جواب سے مطمئن نہیں ہوئے اور وہ ایک مرتبہ پھر یوں گویا ہوئے:’’آپ ہمیں بتا رہے ہیں کہ آپ اس بارے میں کچھ نہیں جانتے۔ نیز یہ کہ کوئی صدر کو جملے کے درمیان میں کاٹ دیتا ہے۔ کیا آپ اس کمیٹی کو یہی بتانے کی کوشش کررہے ہیں؟ کیونکہ یہاں ہر کسی نے اسے دیکھا ہے۔‘‘

اس پر انٹونی بلینکن نے جواب دیا:’’سینیٹر، میں آپ کو گذشتہ 20 سال کے دوران میں صدر کے ساتھ گزرے اپنے تجربے کی بنیاد پربتارہا ہوں،صدراپنے لیے بہت زیادہ بولتے ہیں... جس کسی نے بھی انھیں یہ کہنے سے روکنے کی کوشش کی کہ وہ کیا کہنا چاہتے ہیں یا انھیں اپنے ذہن کی بات کرنے سے روکنے کی کوشش کی تو شاید وہ لوگ اپنی ملازمت سے ہاتھ دھو بیٹھیں گے۔‘‘

’’خاموش بٹن‘‘(میوٹ بٹن) کا خیال بظاہر پیر کے روز ری پبلکن نیشنل کمیٹی کی طرف سے ٹویٹ کیے گئے ایک ویڈیو کلپ سے سامنے آیا ہے۔اس میں صدربائیڈن کو ایک تقریب میں بولتے ہوئے دکھایا گیا ہے اور پھر وائٹ ہاؤس فیڈ کاٹ دیتاہے۔وہ ٹویٹ یہ ہے: